ظہیر نے اعتراف جرم بھی کیا تھا اب ظہیر جیل میں ہے

جس گھر کے افراد احتجاج اور واویلا کررہے ہیں اسی گھر کے ایک شخص ظہیر اللہ نے اج سے دو سال پہلے میجر ثاقب کو ریموٹ کنٹرول بم کے زریعے شہید کیا تھا۔

ظہیر نے اعتراف جرم بھی کیا تھا اب ظہیر جیل میں ہے جبکہ اس کے باقی افراد بھی ٹی ٹی پی کے سہولت کاری میں ملوث ہے۔ کل جن چار بندوں نے سکول کو بم سے اڑھایا وہی افراد بھی انہیں کے گھر سے نکلے تھے

‏باجوڑ میں جو امن آیا ہے یہ پاک فوج اور علاقے کے عوام کی بے پناہ قربانیوں کے بعد آیا ھے۔ اب جب حالات

‏بہتر ھوناُشروع ھوا تو ٹی ٹی پی کے فسادیوں کو تکلیف ہو رہی ہےاور علاقے کے امن کو اک بار پھر خراب کرنے کی کوشش کیجارہی ہے۔ لوگوں کو ورغلا کے فورسز کو دباو میں ڈالنے کی کوشیشں کیجارہی ہے۔ یاد رکھیں دھشت گرد نہ عوام کے دوست ہے نہ ملکی اداروں کے اور جو ان کی بلاواسطہ یا بلواسطہ مدد کرے وہ بھی عوام کے دشمن ھیں۔ ھمیں اپنے فورسز پر فخر ھے اور مطالبہ کرتی ھے کہ ان دھشت گرد تنظیموں اور ان کے مددگاروں کیخلاف بھرپور کاروائی کریں اور ان شرپسندوں کو علاقے کا امن تباہ کرنے کی اجازت ہرگز نہ دی جاۓ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here