وزیراعظم عمران خان نے لاک ڈاؤن کے دوران گرفتار تمام غریب افراد کو رہا کرنے اور بیرون ملک 40 ہزار پاکستانی مزدوروں کو واپس لانے کی تیاری کے احکامات جاری کردیے۔

وزیراعظم عمران خان نے لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی پر گرفتار کیے گئے تمام غریب افراد کو رہا کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا ہے کہ جن دیہاڑی دار اور ٹھیلے والوں کو گرفتار کیا گیا ہے انہیں فوری رہا کیا جائے۔

وزیراعظم نے بیرون ملک 40 ہزار پاکستانی مزدوروں کو واپس لانے کے لیے اقدامات کرنے کا حکم بھی دے دیا، وزیراعظم نے ہدایات دی ہیں کہ بیرون ممالک سے مزدور پاکستانیوں کی واپسی کی تیاری شروع کی جائے۔

وزیراعظم کا کہنا ہے کہ بیرون ملک 40 ہزارپاکستانی مزدوروں کی آئندہ ہفتے واپسی کا اقدام اٹھایا جائے اور جو پاکستانی مزدور وطن پہنچیں تو واپسی پر انہیں قرنطینہ میں رکھا جائے۔

اس سے قبل وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے خصوصی کمیٹی برائے کورونا کے اجلاس میں کہا تھا کہ پاکستان واپس آنے والوں کی تعداد 40 ہزار تک بڑھ سکتی ہے، تمام پہلوؤں کو مدنظر رکھتے ہوئے لائحہ عمل اپنانا ہوگا۔

وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ متحدہ عرب امارات میں واپسی کے منتظر بہت سے پاکستانی روزگار سے محروم ہو چکے ہیں، 16 سو 40 پاکستانیوں کو 12 خصوصی فلائٹس کے ذریعے واپس لایا گیا،ان 16 سو 40 مسافروں میں سے 28 مسافروں کے کرونا ٹیسٹ مثبت آئے۔

انہوں نے کہا کہ 22 سو 48 پاکستانی اس وقت انڈونیشیا، کینیا، یوگنڈا اور سوڈان میں موجود ہیں، نیپال میں 14 اور مالدیپ میں 4 پاکستانی واپسی کے منتظر ہیں۔ اگلا مرحلہ کل سے شروع ہو رہا ہے جنہیں 9 پروازوں سے لایا جائے گا۔ ان میں بیرون ممالک میں مقیم پاکستانی بھی شامل ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here