نوازشریف کی روانگی عدالتی فیصلےکےبعدعمل میں آئی، وزیراعظم

0
146

وزیراعظم عمران خان نے پارٹی ترجمانوں کو چیف جسٹس آف پاکستان کے حالیہ بیان پر تبصرے کرنے سے روکتے ہوئے کہا ہے کہ چیف جسٹس محترم ہیں ان کے کسی بیان پرمیڈیا میں گفتگو نہ کی جائے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت پارٹی ترجمانوں کااجلاس ہوا جس میں سیاسی اور معاشی صورتحال کا جائزہ لیا گیا، اجلاس میں نوازشریف کی لندن روانگی کے بعد کی صورتحال پر گفتگو بھی کی گئی۔

اس موقع پر وزیراعظم کا کہنا تھا کہ شریف فیملی پاکستانی عوام کے سامنے مکمل بےنقاب ہوگئی، نوازشریف کی روانگی عدالتی فیصلے کے بعد عمل میں آئی، جن بیٹوں نے استقبال کیا وہ پاکستان میں اشتہاری ہیں اور جو ساتھ گیا اس کے بیٹے اور داماد بھی اشتہاری ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: ہمارے سامنے طاقتور صرف قانون ہے، چیف جسٹس آصف کھوسہ

اجلاس میں فضل الرحمان کےدھرنے کے بعد کی صورتحال پر بھی بات چیت کی گئی جس پر وزیراعظم کا کہنا تھا کہ مولانا اب خفت مٹانے کی کوشش کررہے ہیں، مولانا فضل الرحمان کی سیاست ختم ہوچکی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم نے ملکی معاشی صورتحال پر اطمینان کا اظہارت کرتے ہوئے کہا کہ معاشی حالات دن بدن بہتر ہونےہورہے ہیں، اپوزیشن کومعیشت میں بہتری کاخوف ہے کیونکہ حکومت معیشت کو اوپر لے گئی تو ان کی باریاں نہیں آئیں گی۔

وزیراعظم نے اپنے مؤقف اور نظریے پر ڈٹ کر کھڑے رہنے کےعزم کا اظہار کرتے ہوئے کرپٹ مافیا کا مقابلہ جاری رکھنےکا اعلان بھی کیا۔

اجلاس کےدوران پارٹی فنڈنگ کیس سے متعلق بھی سوالات کیے گئے جس پر وزیراعظم نے پارٹی فنڈنگ کیس میں اراکین کومطمئن رہنےکا کہا ، وزیراعظم نے کہا کہ عدالتوں میں اثاثوں کی تفصیلات بتا چکے ہیں، پارٹی فنڈز کےآڈٹ ہوئے ہیں،کسی فکرکی ضرورت نہیں۔

وزیراعظم کی زیر صدارت اجلاس میں چیف جسٹس کے تازہ بیان کا بھی ذکر ہوا ،وزیراعظم نے حکومتی ترجمانوں کو چیف جسٹس کے بیان پرتبصرے سے روک دیا، وزیراعظم کا کہنا تھا کہ چیف جسٹس محترم ہیں ان کے کسی بیان پرمیڈیا میں گفتگو نہ کی جائے ۔

ذرائع کے مطابق چیئرمین نیب کےبیانات کا تذکرہ ہوا تو وزیراعظم نے کہا کہ احتساب کا حامی ہوں خواہ اپوزیشن ہو یا حکومت، نیب آزاد ہےجس کا چاہے بلاتفریق احتساب کرے،جس نےملک کے پیسے کھائے اس کو حساب دینا ہوگا اور حکومت احتساب کی راہ میں رکاوٹ نہیں بنے گی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here