افغانستان پر طالبان کا قبضہ مشیر قومی سلامتی معید یوسف کا بیان

کابل پر توقع سے بہت پہلے قبضہ ہوگیا، جس کے بعد بھارت کو سانپ سونگھ گیا ہے اور دہلی میں مکمل سناٹا ہے۔

افغانستان کی صورتحال پر نظر رکھے ہوئے ہیں، کابل میں پھنسے تمام ممالک کے شہریوں کو ویزہ سہولت دے رہے ہیں ، کابل پر توقع سے بہت پہلے قبضہ ہوگیا۔

طالبان کے قبضے کے بعد بھارت کو سانپ سونگھ گیا ہے اور دہلی میں مکمل سناٹا ہے، پاکستان کیخلاف کسی ملک نے کوئی بیان نہیں دیا جو ہماری کامیابی ہے ، آئی ایم ایف ورلڈ بینک حکام پاکستان سےافغانستان کومانیٹرکرنا چاہتا ہے۔

یاد رہے افغانستان کے موجودہ حالات کے تناظر میں شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ بھارت کو موجودہ حالات میں ذمےداری کا ثبوت دينا چاہيے، عالمی برادری افغانستان میں امن و استحکام کی خواہاں ہے اور توقع کرتی ہے کہ بھارت بھی مثبت کردار ادا کرے، خطے کي بہتری کيلئے بھارت کو ذمےداری دکھانی ہوگی۔

خیال رہے افغان طالبان افغان دارالحکومت کابل اور بعد ازاں صدارتی محل کا کنٹرول حاصل کرچکے ہیں، افغانستان میں عبوری حکومت کے قیام کا اعلان ہوچکا ہے، طالبان کا کہنا تھا کہ کابل میں کوئی عبوری حکومت قائم نہیں ہوگی بلکہ فوری اورمکمل طور پر ‏انتقال اقتدار چاہتے ہیں۔

افغانستان پر طالبان

یہ اعلان اتوار کے روز طالبان کی جانب سے کابل میں افغان صدارتی محل کا کنٹرول حاصل کرنے کے بعد سامنے آیا ، طالبان کا کہنا تھا کہ کابل میں کوئی عبوری حکومت قائم نہیں ہوگی بلکہ فوری اورمکمل طور پر ‏انتقال اقتدار چاہتے ہیں۔

خیال رہے طالبان کے شہر میں داخل ہوتے ہی صدر اشرف غنی ملک چھوڑ کر بھاگ گئے ، انہوں نے کہا تھا کہ وہ خونریزی سے بچنا چاہتے ہیں ، جبکہ سینکڑوں افغان کابل ایئرپورٹ سے نکلنے کے لیے بے چین ہیں۔

عرب میڈیا کو انٹرویو دیتے ہوئے

ترجمان طالبان محمد نعیم نے بتایا کہ کسی سفارت خانے یا ہیڈ کوارٹرز کو نشانہ نہیں بنائیں گے، شہریوں اور سفارتی مشنز کو تحفظ فراہم کریں گے، تمام ممالک اور قوتیں کسی بھی مسئلے کے حل کے لیے ہمارے ساتھ بیٹھیں، طالبان پرامن تعلقات کے خواہاں ہیں، خواتین اور اقلیتوں کے حقوق کا تحفظ شریعت کے مطابق کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا تھا کہ آج طالبان کو 20 سال کی قربانیوں اور جدوجہد کا ثمر مل گیا، افغانستان میں جنگ کا اختتام ہوگیا، اشرف غنی کے فرار ہونے کی امید نہ تھی، حتیٰ کے ان کے قریبی لوگوں کو بھی اندازہ نہیں تھا۔

افغانستان پر طالبان افغانستان میں صورتحال اب کیسی ہے، افغان شہری نے آنکھوں دیکھا حال بتا دیا

افغانستان کی تازہ صورتحال کے پیش نظر کابل میں موجود شہریوں نے اطمینان کا اظہار کیا ہے ان کا کہنا ہے کہ لوٹ مار کرنے والے ملزمان کو طالبان نے گرفتار کرلیا۔ کابل میں صورتحال 60 فیصد کنٹرول میں ہے، افغان فورسز نے چوکیاں خالی کیں تو گاڑیاں چھیننے اور ڈکیتیوں کے واقعات میں اضافہ ہوگیا۔

انہوں نے بتایا کہ طالبان کے روپ میں چہرے ڈھانپے کچھ ملزمان نے شہریوں کو لوٹنے کی کوشش کی، طالبان نے بروقت کارروائی کرکے تمام افراد کو حراست میں لے لیا۔

طالبان کی آمد سے کابل کے شہری اب مطمئن ہیں، خواتین کے برقعے کی پابندی کے حوالے سے پالیسی میں نرمی نظر آرہی ہے۔ ایک افغان شہری کا کہنا تھا کہ اسکول اور بینک دو روز کیلئے بند کردیئے گئے، مارکیٹیں بھی بند ہیں، طالبات کو امتحانات دینے کی اجازت دیدی گئی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ گرلز اسکولوں کے باہر کسی بھی مرد کی موجودگی کی اجازت نہیں دی جارہی، طالبان نے پولیس چوکیوں پر اپنے لوگ تعینات کرکے سرکاری گاڑیاں تحویل میں لی ہیں۔

افغان شہری کا کہنا تھا کہ طالبان نے تحویل میں لی گئی سرکاری گاڑیوں میں گشت شروع کردیا ہے، بارڈر کی بندش سے اشیائے خوردونوش کی قلت اور قیمتوں میں اضافہ ہوگیا ہے۔ افغانستان میں پیٹرول ،دالیں، گھی چینی چاول، آٹا اور دیگر اشیائے خورو نوش مہنگی ہوگئی ہیں۔

افغان شہری کے مطابق ایئرپورٹ پر امریکہ اور کینیڈا کے جہازوں کی آمد کی افواہ پھیلائی گئی، افواہ کے بعد ایئرپورٹ پر ہنگامہ آرائی اور رش کی صورتحال دیکھنے میں آئی، افواہ پھیلائی گئی کہ امریکہ اور کینیڈا کے جہاز افغان شہریوں کو لے جانے آئے ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here