سکھر، کالعدم تنظیم کا خطرناک دہشت گرد گرفتار

 سندھ کے ضلع سکھر میں انسداد دہشت گردی فورس نے کارروائی کر کے  فورسز پر حملہ کرنے والے کالعدم تنظیم کے مبینہ دہشت گرد کو حراست میں لے لیا۔

سکھر میں کاؤنٹر ٹیررازم ڈیپارٹمنٹ (سی ٹی ڈی) پولیس نے کارروائی کر کے کالعدم تنظیم سے وابستہ دہشت گرد کو گرفتار کیا، جس کے قبصے سے اسلحہ بھی برآمد ہوا۔

سی ٹی ڈی حکام کے مطابق ملزم نے کالعدم تنظیم بلوچ لبریشن آرمی (بی ایل اے) کے کیمپ سے ٹریننگ حاصل کی اور پھر کالعدم جماعت میں شامل ہوا۔

ملزم نے دورانِ تفتیش متعدد جرائم کی وارداتوں کا اعتراف کیا اور بتایا کہ وہ کالعدم تنظیم کے تربیتی کیمپ کا نائب کمانڈر رہا  ہے جبکہ اُس نے ساتھیوں کے ساتھ مل کر فورسز کے کیمپ پرحملہ بھی کیا۔

سی ٹی ڈی حکام کے مطابق کیمپ پر حملے کے وقت سیکیورٹی فورسز نے جوابی کارروائی کی جس میں دہشت گرد کا ساتھی بہرام مری مارا گیا تھا۔

ملزم نے اعتراف کیا کہ اُس نے بارود اوراسلحہ کوہلو کے علاقے میں زیر زمین چھپا دیا تھا، دفن کیے گئے اسلحہ میں7 کلاشنکوف ، 7 مارٹر گولے، ایل ایم جی شامل ہے۔

Militant involved in attacks on security forces arrested in Sukkur

The Counter-Terrorism Department (CTD) of the police on Sunday claimed to have arrested a militant associated with a banned outfit in Sukkur.

According to a spokesperson of CTD, the police, on a tip-off, conducted raid at a house in Sukkur and arrested a suspect associated with a banned organization. During the initial interrogation, the suspect confessed to attacking on a camp of the security forces, the spokesperson added.

He told the investigation officer that he had been deputy commander of the insurgents’ training camp.

Earlier on June 6, the Counter-Terrorism Department (CTD) had claimed to arrest two alleged terrorists after an exchange of fire in Balochistan’s Kalat town.

The CTD spokesperson had said that two terrorists had been arrested during an intelligence-based operation in Kalat when they were transporting a huge cache of arms. The arrested terrorists were being interrogated, the spokesperson had added.

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here