آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا مولانا عادل خان کے قتل پر اظہار افسوس

0
13

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے معروف عالم دین مولانا عادل کے قتل کی شدید الفاظ میں مذمت اور اظہار افسوس کیا ہے۔ 

مہتمم جامعہ فاروقیہ مولانا عادل کے قتل پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ مولانا عادل کا قتل پاکستان دشمنوں کی جانب سے امن خراب کرنے کی کوشش ہے۔ 

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے مجرموں کو کٹہرے میں لانے کے لیے پاک فوج کو سول انتظامیہ کی ہر ممکن مدد کرنے کی ہدایت بھی کی ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کی جانب سے ٹویٹ میں کہا گیا کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کراچی میں مولانا عادل خان کے قتل پر اظہار افسوس کیا ہے۔

آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ آرمی چیف نے ٹارگٹ کلنگ کی شدید مذمت کی، انہوں نے کہا ہے کہ یہ واقعہ پاکستان میں ملک دشمنوں کی انتشار پھیلانے کی کوشش ہے۔

آرمی چیف نے مجرمان کو کٹہرے میں لانے کے لیے سول انتظامیہ سے مکمل تعاون کی ہدایات بھی کردی ہے۔

وزیر اعظم عمران خان نے بھی مولانا عادل کی ٹارگٹ کلنگ کی مذمت کرتے ہوئے کہا تھا کہ بھارت پاکستان میں علماء کو قتل کرا کر شیعہ سنی فرقہ وارانہ تنازع پیدا کروانا چاہتا ہے۔

علاوہ ازیں وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے مولانا عادل کے قاتلوں کو فوری طور پر گرفتار کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا تھا کہ کچھ شدت پسند شہر کا امن خراب کرنا چاہتے ہیں۔

خیال رہے کہ کراچی میں گزشتہ رات جامعہ فاروقیہ کے مہتمم مولانا عادل خان کی گاڑی پر فائرنگ کی گئی جس میں وہ اور ان کے ڈرائیور زخمی ہوئے۔

مولانا عادل کو 2 گولیاں لگیں جن میں سے ایک ان کی گردن پر لگی، اسپتال پہنچنے تک مولانا عادل دم توڑ چکے تھے۔

مولانا ڈاکٹر عادل خان وفاق المدارس العربیہ کی مجلس عاملہ کے رکن بھی تھے۔

پولیس کے مطابق مولانا ڈاکٹر عادل خان ویگو گاڑی میں شاہ فیصل کالونی نمبر 2 میں موجود تھے کہ ان کی گاڑی پر مبینہ طور پر موٹر سائیکل سوار ملزمان نے فائرنگ کی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here