طالبان قیدیوں کو رہا کرنے کے پابند نہیں، افغان صدر اشرف غنی کا یوٹرن

طالبان قیدیوں کو رہا کرنے کے پابند نہیں

افغانستان کے صدر اشرف غنی نے کہا ہے کہ طالبان کو رہا کرنے کے پابند نہیں، ہم نے ایسا کوئی وعدہ نہیں کیا، معاہدہ بند دروازوں میں ہوا،اس پرعمل درآمد میں مشکلات ہیں۔

افغان صدر اشرف غنی یوٹرن لیتے ہوئے گزشتہ روز ہونے والے امریکہ طالبان امن معاہدے کی اہم شرط سے پیچھے ہٹ گئے ہیں ان کا کہنا ہے کہ ہم نے افغان طالبان کے پانچ ہزار قیدیوں کی رہائی کا کوئی وعدہ نہیں کیا ، طالبان قیدیوں کی رہائی کا معاملہ انٹر افغان مذاکرات کے ایجنڈے میں شامل کیا جاسکتا ہے۔

افغان صدر اشرف غنی نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ افغان حکومت جیلوں میں قید طالبان کو رہا کرنے کی پابند نہیں، 5ہزار طالبان کی رہائی کا کوئی وعدہ نہیں کیا، معاہدہ بند دروازوں میں ہوا،اس پر عمل درآمد میں مشکلات ہیں۔

انہوں نے کہا کہ قیدیوں کی رہائی کا اختیار امریکا کے پاس نہیں ہہ ہمارا اختیار ہے، طالبان قیدیوں کی رہائی کا معاملہ مذاکرات کی پیشگی شرط نہیں بن سکتا۔

اشرف غنی نے کہا کہ طالبان کے قیدیوں کا معاملہ افغانستان کے عوام کا حق اور خود ارادیت ہے، جزوی جنگ بندی مکمل جنگ بندی کے مقصد کے حصول تک جاری رہے گی۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ افغانستان میں7روز کی جزوی جنگ بندی جاری رہے گی، واضح رہے کہ افغان امن معاہدے کے تحت 5ہزار طالبان کی رہائی 10 مارچ تک طے ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here