وزارت داخلہ کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس سے نمٹنے اور متعدد ملکوں میں کووڈ 19 کی دوسری لہر اور کرونا ویکسین نہ ہونے کی وجہ سے سال رواں کے آخر تک سفری پابندیاں برقرار رہیں گی۔

وزارت داخلہ کے مطابق جی سی سی ممالک کے شہریوں اور خروج و عودہ، ملازمت، اقامہ یا وزٹ ویزا ہولڈر غیر ملکیوں کو بھی سعودی عرب آنے کی اجازت کرونا ضوابط کی پابندی کے ساتھ مشروط ہوگی۔

بیان میں کہا گیا کہ ہر آنے والے کو یہ ثابت کرنا ہوگا کہ وہ کرونا وائرس سے پاک ہے، اس حوالے سے سرٹیفکیٹ بیرون مملکت رجسٹرڈ ادارے ہی کا قابل قبول ہوگا۔ سعودی عرب پہنچنے سے 48 گھنٹے سے زیادہ پرانا ٹیسٹ کا سرٹیفکیٹ قابل قبول نہیں ہوگا۔

حکام کے مطابق سعودی عرب آمد کے لیے 2 شرائط مقرر کی گئی ہیں۔ پہلی شرط یہ ہے کہ جی سی سی کا شہری یا غیر ملکی کرونا وائرس سے پاک ہو، اس کے لیے اسے پی سی آر کروانا ہوگا۔ پی سی آر کی رپورٹ سعودی عرب پہنچنے سے 48 گھنٹے تک کی ہو، اگر زیادہ وقت گزر گیا تو رپورٹ غیر مؤثر ہوگی۔

دوسری شرط یہ ہے کہ پی سی آر کی رپورٹ متعلقہ ملک کے ایسے میڈیکل سینٹر سے جاری کردہ ہو جو سعودی عرب میں رجسٹرڈ ہو۔

السعودیہ کے مطابق خروج و عودۃ، ملازمت، اقامہ یا وزٹ ویزوں میں سے کوئی ایک ویزا رکھنے والے غیر ملکیوں کو جنہیں منگل 15 ستمبر 2020 سے سعودی عرب واپسی کی اجازت دی گئی ہے، وہ پروازوں کی سہولت سے مشروط ہے۔ علاوہ ازیں سفر کرنے والے ملک اور جس ملک کا سفر کیا جا رہا ہے ان دونوں سے بھی منظوری حاصل کرنا ہو گی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here