پاک فوج اور ٹی ٹی پی کا ایک دوسرے کے خلاف دعوی ایک ہی جیسا ہے

0
481

پاک فوج اور ٹی ٹی پی کا ایک دوسرے کے خلاف دعوی ایک ہی جیسا ہے !

ٹی ٹی پی کہتی ہے کہ ۔۔۔۔

“پاک فوج امریکہ کی جنگ لڑی رہی ہے جو کہ ایک کافر اور مسلمانوں کا دشمن ملک ہے ۔ اپنے لوگوں اور مجاہدین کو مار رہی ہے ۔ پاک فوج نے وزیرستان اور سوات وغیرہ میں یہی کام کیا ہے ۔ اور اسکے بدلے میں ان کافر ملکوں سے ڈالر ملے ہیں ۔

پاک فوج نے لال مسجد میں بے گناہ معصوم بچوں کو قتل کیا اور مسجد کی بے حرمتی کی ۔

ہمارا قصور صرف یہ ہے کہ ہم امریکہ کے خلاف لڑ رہے ہیں اور پاکستان میں شریعت نافذ کرنا چاہتے ہیں جسکی وجہ سے ساری دنیا کی طاقتیں ہمارے خلاف ہیں ۔ “

دوسری طرف پاک فوج بھی یہی دعوی کرتی ہے ۔

وہ کہتے ہیں کہ۔۔۔

” ٹی ٹی پی امریکہ اور انڈیا کی جنگ لڑ رہی ہے جو دونوں کافر ملک ہیں اور اسلام اور مسلمانوں کے کھلے دشمن ہیں ۔ قبائیلی علاقوں میں امریکہ کے خلاف لڑنے والے ان مجاہدین کو مارتی ہے جو وہاں پناہ لیتے ہیں ۔ اپنے لوگوں کو ذبح کرتی ہے اور اس کام کے بدلے انکو امریکہ اور انڈیا پیسے دیتا ہے اور وہی انکے جہاد کو کنٹرول کرتا ہے ۔

ٹی ٹی پی نے بے شمار مساجد میں دھماکے کیے اور بازاروں میں معصوم لوگوں ، بچوں اور خواتین کو بموں سے اڑایا۔

ہم اسلیے انکے نشانے پر ہیں کیونکہ ہم افغان جہاد کو خفیہ طور پر سپورٹ کرتے ہیں اور اسلامی دنیا کے اکلوتے ایٹمی پروگرام کے محافظ ہیں . پاکستان کو اسلام کا آخری قلعہ سمجھتے ہوئے اسکی حفاظت کرتے ہیں اور دنیا کی تمام بڑی طاقتیں امریکہ، اسرائیل اور انڈیا پاکستان کو وجود ختم کرنے کے درپے ہیں اور پاک فوج کو ہی رکاؤٹ سمجھتی ہیں “

دونوں کے پاس دلائل اور ثبوت ہیں ۔ دونوں کے حامیوں سے یہ درخواست ہے کہ دونوں طرف کے دلائل دیکھے جائیں اور بات سنی جائے ۔ ورنہ باطل کا ساتھ دینے والے کا حشر بھی اللہ ان کے ساتھ ہی کرے گا ۔

اگر پھر بھی کچھ سمجھ نہ آئے تو میں پھر یہ کہتا ہوں کہ علماء سے پوچھ کر کسی بھی جماعت کا ساتھ دینے سے پہلے استخارہ کر کے اللہ سے مشورہ کر لینا چاہئے ۔ یہ بچگانہ بات نہیں ہے اور اسکی تاکید کی گئی ہے ۔ استخارہ صرف ہمارے کاروبار اور شادی بیاہ کے معاملات کے لیے نہیں آیا ہے ۔

اور یہ دعا کریں کہ ۔۔۔ ” یا اللہ اس جنگ میں حق کو غالب کر دے اور باطل کو رسوا کر دے ” ۔۔۔!!

تحریر شاہد خان

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here