وزیراعظم عمران خان نے داسو واقعے میں چینی شہریوں کی ہلاکت پر اظہار افسوس کرتے ہوئے واضح کیا کہ پاکستان میں چینی شہریوں کی سلامتی حکومت کی اولین ترجیح ہے، دشمن قوتوں کوبرادرانہ تعلقات کو نقصان پہنچانے کی اجازت نہیں۔

وزیراعظم عمران خان اور چینی ہم منصب کے درمیان ٹیلیفونک رابطہ ہوا، ٹیلی فونک رابطے میں وزیراعظم نے داسو واقعہ میں چینی شہریوں کی ہلاکت پر اظہار افسوس کیا اور کہا کہ پاکستان حکومت متاثرہ چینی خاندانوں کےغم میں برابرکی شریک ہے۔

پاکستان زخمیوں کوبہترین طبی سہولتیں فراہم کررہاہے، افسوسناک واقعےکی تحقیقات کیلئےتمام کوششیں بروئےکارلائی جائینگی۔

گذشتہ روز وفاقی وزیراطلاعات فواد چوہدری نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں کہا تھا کہ داسو واقعے کی ابتدائی تفتیش میں بارودی مواد کی تصدیق ہوگئی ہے ، واقعہ میں دہشت گردی کے عنصر سے انکار نہیں کیا جاسکتا۔

فوادچوہدری کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم ذاتی طور پر پیشرفت کی نگرانی کر رہے ہیں ، حکومت چینی سفارتخانے کے ساتھ مکمل رابطے میں ہے، ہم مل کر دہشت گردی کے لعنت سے لڑنے کے لئے پرعزم ہیں۔

دو روز قبل پاکستان میں چینی سفارتخانے کی جانب سے بیان میں کہا گیا تھا کہ داسو پاور پراجیکٹ کی بس پر دھماکہ ہوا، حادثے میں 9 چینی باشندے اور 3 پاکستانی باشندے جاں بحق ہوئے۔

چینی سفارتخانہ کا کہنا تھا کہ پاکستان اس معاملے کی تحقیقات کر رہا ہے، حادثے کے فوری بعد چینی سفارتخانے نے ہنگامی بنیادوں پر پاکستانی وزارت خارجہ وزارت داخلہ اور پاکستانی فوج سے رابط کیا ، جس میں پاکستانی متعلقہ حکام سے معاملہ کی فوری تحقیقات اور پاکستان میں چینی پراجیکٹس کی سیکیورٹی یقینی بنانے پر زور دیا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here