یہ 71ءنہیں بلکہ 17ء ہے

0
355

یہ 71ءنہیں بلکہ 17ء ہے
جس طرح ان دونوں سالوں کی ترتیب کو بدل دیا جائے تو ان میں پائی جانے والی مماثلت ختم نہیں ہو گی بالکل اسی طرح پاکستان کے لیے تیار کئے گے پھندے میں بھی ایک خاص مماثلت پائی جاتی ہے جس طرح 71ء میں پاکستان کو مشرقی پاکستان کے محاذ پہ پھنسا کر دو لخت کر دیا گیا تھا اور پاکستان اور پاک افواج کو ناقابلِ تلافی نقصان پہنچا گیا تھا
بالکل آج 17ء میں پاکستان اور پاک افواج کو برما کے محاذ پر پھنسا کر کاری ضرب لگانے کی تیاریاں عروج پر پہنچ چکی ہیں ایک طرف تو برما میں مسلمانوں پر ظلم و ستم کے پہاڑ توڑ دئیے گے ہیں تو دوسری طرف اسے بین الاقوامی مین سٹریم میڈیا میں خاص جگہ دے کر پاکستان اور پاک افواج کے لیے ایک چیلنج بنا دیا گیا ہے اس کے علاوہ پاکستان کو مشرق کی جانب سے بھارت اور مغربی باڈر کی جانب سے امریکہ اور نیٹو فورسز نے گھیرا ہوا ہے اس تمام صورتحال کو سمجھنے کے لئے کسی راکٹ سائنس کی ضرورت نہیں اس وقت تمام طاغوتی طاقتیں آزاد بلوچستان کے فلاپ ڈرامے کے بعد اب مقبوضہ کشمیر میں داعش کو منظم کروا رہی ہیں بھارت کی زیرِ نگرانی….. اس سب کا مقصد سی پیک کا راستہ روکنے کے لئے کشمیر کو امریکہ اور نیٹو فورسز کے انڈر کرنا ہے اس سے ایک طرف کشمیر کو ایک آزاد اور خود مختار ملک کا جھانسہ دے کر پاکستان کے پانی پر قبضہ رکھا جائے گا اور دوسری طرف گلگت بلتستان میں مداخلت شروع کروا کر سی پیک کے عظیم الشان منصوبے کو سبوتاژ کرنا ہے
اس سب میں ہمیں ایک متحد قوم ہونے کا ثبوت دیتے ہوئے پاک افواج کی بھرپور حمایت جاری رکھنا چاہئے دشمن کی کسی بھی چال کو ناکام بناتے ہوئے ہرمحاذ پر قومی سلامتی کو مدِ نظر رکھنا چاہئے ایک مسلمان اور پاکستانی ہونے کے ناطے ہمیں اللہ کے بعد پاک افواج پر پورا بھروسہ ہے وقت آنے پر الحمدلله پاک افواج دشمن کو وہاں وہاں سے چوٹ پہنچانے کی صلاحیت رکھتی ہے جہاں سے ہمارے دشمن نے کبھی سوچا بھی نہیں ہو گا اسی لیے میں نے شروع میں کہا تھا کہ یہ 71ء نہیں 17ء ہے اور پاکستان ملک دشمن عناصر کو ایک اچھا سرپرائز دینے کی بہترین پوزیشن میں ہے کیونکہ جنگیں ہتھیاروں سے نہیں بلکہ جذبہ ایمانی سے لڑی اور جیتی جاتی ہیں
پاکستان زندہ باد
پاک افواج پائندہ باد

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here