یہ آئی بی افسران جعلی پاسپورٹس پر اسرائیل کے دورے بھی کر چکے ہیں۔ ان کے جن پاکستان دشمن عناصر سے روابط ہیں ان کے زیادہ ٹھکانے تر بھلوال، سرگودھا اور کوٹ مومن میں ہیں جہاں یہ مالٹے کا جعلی کاروبار کر رہے ہیں۔

0
1638

پاکستان پر ایک اور وار ۔۔۔۔۔ !

آئی بی افسر ملک مختار احمد شہزاد نے اسلام آباد ھائی کورٹ میں اپنی ہی ایجنسی کے بعض اعلی افسران کے خلاف درخواست جمع کرائی ہے جس میں موقف اختیار کیا ہے کہ مذکورہ افسران دہشت گردوں کی معاؤنت کر رہے ہیں اور ملک دشمن ایجنسیوں کے ساتھ ملکر پاکستان کے خلاف کام کر رہے ہیں۔

یہ آئی بی افسران جعلی پاسپورٹس پر اسرائیل کے دورے بھی کر چکے ہیں۔ ان کے جن پاکستان دشمن عناصر سے روابط ہیں ان کے زیادہ ٹھکانے تر بھلوال، سرگودھا اور کوٹ مومن میں ہیں جہاں یہ مالٹے کا جعلی کاروبار کر رہے ہیں۔

درخواست گزار نے عدالت سے استدعا کی ہے کہ اس معاملے کی تحقیقات آئی ایس آئی سے کرائی جائیں کیونکہ آئی بی خود اس پر کوئی ایکشن لینے کے لیے تیار نہیں۔ جس کے بعد عدالت نے ڈی جی آئی بی اور سیکٹری داخلہ کو طلب کر لیا ہے۔
یہ معاملہ تین سال پہلے نواز حکومت کے علم میں لایا گیا لیکن وہاں اس پر پراسرار خاموشی اختیار کی گئی۔

پاکستان کی سب سے بڑی سول ایجنسی “آئی بی” پر نواز شریف کا کس قدر کنٹرول ہے اسکا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ سپریم کورٹ نے نواز شریف کے خلاف بننے والی جے آئی ٹی کے اراکین میں ایک بھی آئی بی کا بندہ شامل نہیں کیا تھا۔ بلکہ جے آئی ٹی کے سربراہ نے باقاعدہ شکایت کی تھی کہ آئی بی ان کے کام میں روڑے اٹکا رہی ہے۔

آپ کو یاد ہوگا کہ کچھ دن پہلے اچانک وزیراعظم پاکستان نے بہت بڑے پیمانے پر آئی ایس آئی میں سویلین افسروں کو گھسیڑنے کا فیصلہ کیا تھا۔
کہا جا رہا ہے کہ زیادہ تر افسران کا انتخاب ” آئی بی ” سے کیا جانا تھا۔ آپ کو کیا لگتا ہے منتخب جمہوری حکومت کن افسران کا انتخاب کرتی؟؟
کیا یہ ممکن ہے کہ جن دہشت گردوں کے خلاف آئی ایس آئی برسرپیکار ہے انہی کو کمانڈ کرنے والے آئی ایس آئی کو بھی کمانڈ کرنے لگتے۔۔۔!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!

پاکستان کے خلاف یہ کس قدر خوفناک جنگ لڑ رہے ہیں اسکی کچھ جھلکیاں آپ کو صرف اسی ہفتے کی خبروں میں مل جائنگی۔
ن لیگی وزیر خارجہ دنیا کو قائل کرنے میں لگے ہوئے ہیں کہ ” پاکستان کو ڈومور کرنے کی ضرورت ہے اور پاکستان میں دہشت گردوں کی کوئی کمی نہیں” ۔۔ جس کے بعد اسلام آباد میں پراسرار انداز میں داعش کے پوسٹرز جگہ جگہ لگائے گئے۔
عوام کو پاک فوج کے خلاف مسلسل اکسایا جا رہا ہے جس کے بعد لاہور میں لیگی کارکنوں نے پاک فوج مردہ باد کے نعرے لگا دئیے۔
کراچی میں سنٹرل جیل میں پیپلز پارٹی اور پولیس کی ملی بھگت سے دہشت گردوں کی بھرتیاں کی جا رہی ہیں۔
اور اب پاکستان کی سب سے بڑی سول ایجنسی میں سرائیت کر کے اس کو بھی پاکستان کے خلاف استعمال کیا جا رہا ہے۔

یہ بھی خبر آئی ہے کہ وزیراعظم کی ہدایت پر آئی بی نے ایک لیٹر جاری کیا جس میں 37 اراکین اسمبلی کے نام ہیں جن کے دہشت گردوں سے روابط ہیں۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ ان میں سے اکثریت ان اراکین کی ہے جن کے بارے میں کہا جا رہا تھا کہ وہ کسی بھی وقت ن لیگ چھوڑ سکتے ہیں ۔۔  ۔۔۔ ہیں نا دلچسپ بات ؟؟
اب وزیراعظم اور آئی بی دونوں اس سے انکار کر رہے ہیں لیکن بہرحال مذکورہ اراکین کو پیغام مل گیا!

تحریر شاہدخان

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here