کیا نواز شریف انڈیا کے ساتھ اپنا دوستانہ بلکہ خوش آمدانہ رویہ برقرار رکھیں گے ؟؟؟؟؟

0
425

رحمان ملک اکثر شور مچایا کرتا تھا کہ ہمارے پاس بلوچستان میں انڈین مداخلت کے ناقابل تردید ثبوت ہیں اور یہ کہ بی ایل اے کو انڈیا کنٹرول کرتی ہے لیکن وہ اور اسکی حکومت یہ ثبوت عالمی برادری اور انڈیا کے سامنے پیش کرتے ہوئے شرماتے رہے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ کیونکہ وہ انڈیا کو پسندیدہ ترین ملک قرار دے چکے تھے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔!!

چونکہ ان ثبوتوں کے بارے میں آرمی کے بیانات بھی آئے ہیں کہ بلوچستان گڑبڑ میں انڈیا کے ملوث ہونے کے ثبوت وزارت داخلہ اور حکومت کے حوالے کیے ہیں اسلئے ماننا پڑتا ہے کہ یہ ثبوت موجود ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔!!

ہم کہہ سکتے ہیں کہ کل انڈیا نے بابائے قوم کی یادگار تباہ کی اور بچیوں کا قتل عام کیا ۔۔۔۔ سوال یہ پیدا ہوتا کہ اب موجودہ حکومت کا رویہ کیا ہوگا انڈیا کے ساتھ ۔۔۔۔۔۔۔ !!

کیا نواز شریف انڈیا کے ساتھ اپنا دوستانہ بلکہ خوش آمدانہ رویہ برقرار رکھیں گے ؟؟؟؟؟
کیا بلوچستان میں اس ساری گڑبڑ اور تباہی کو بس حقوق ، بی ایل اے، قوم پرستی اور دہشت گردی کے دائرے میں ہی رہنے دیں گے تاکہ انڈیا کا نام نہ آئے ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟

ہر حکومت کو اس ملک کی خفیہ ایجنسیاں روزانہ بریف کرتی ہیں پاکستان میں بھی یہ ہوتا ہے ۔۔۔۔۔۔۔۔ کیا نواز شریف ان سارے ثبوتوں کو نظر انداز کر دیں گے ؟؟؟؟؟؟؟

وہ انڈیا جو پاکستان کے ساتھ یہ سب کچھ کر رہا ہے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔جو توانائی کی شدید کمی کا شکار ہونے کے باوجود پاکستان کے راستے ایران گیس پائپ لائن میں ٹال مٹول کرتا رہا تاکہ پاکستان کو بالادست حیثیت حاصل نہ ہو ۔۔۔۔۔۔۔ اس انڈیا سے نواز شریف پوری قوم غیرت و حمیت پر لات مار کر بجلی خریدنا چاہتا ہے اور چالاک بنیا جو خود لوڈ شیڈنگ اور بجلی کی کمی کے معاملے میں دنیا میں پہلے نمبر پر ہے فوراً پاکستان کی یہ “مدد” کرنے کو تیار ہے آخر کیوں؟؟؟؟

جمہوریت پسند کہتے ہیں کہ آرمی کو نہیں آنا چاہئے وہ سیاست نہیں جانتی کیا سیاست یہی ہوتی ہے جو پچھلے چھ سال سے ملک میں جاری ہے ۔۔۔۔ آرمی سیاست اور سفارت کاری نہیں جانتی لیکن جنرل مشرف نے انڈیا کو پاکستان کے راستے ایران سے گیس خریدنے پر تقریباً راضی کر لیا تھا تاکہ پاکستان کو سٹریٹیجک بالا دستی حاصل ہو ۔۔۔۔۔۔۔ یہ سیاست جانتے ہیں لیکن انہوں نے نہ صرف اس اہم ترین منصوبے کو بند کر دینا چاہتے ہیں بلکہ الٹا انڈیا سے بجلی خریدنے کے لیے تیار ہو گئے ہیں تاکہ انڈیا ہم پر حاوی ہو ۔۔۔۔۔۔۔۔!!

کیا ہمارا میڈیا ، سیاست دان اور وزیراعظم اس معاملے میں انڈیا سے کوئی بھی سوال کریں گے جو کچھ کل انہوں نے بلوچستان میں کیا ۔۔۔۔۔۔؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟

اگر یہ خاموش رہے تو ہم سمجھ جائیں گے کہ آخر نوازشریف پاکستان کے وہ واحد وزیراعظم کیوں ہیں جن کے بننے پر انڈیا میں خوشیاں منائیں گئیں ۔۔۔۔۔۔۔!!!!!!!!!!

تحریر شاہد خان

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here