کیا آپ کو اندازہ ہو رہا ہے کہ جمہوریت نے کس خوفناک انداز میں عوام کی طرز فکر کو تبدیل کیا ہے!

0
501

عوام کی حالت یہ ہے کہ وہ سیاسی قوتوں کے لیے اپنے دل میں ایک خاص قسم کی محبت اور تعظیم پالتے رہتے ہیں۔ سیاست کے نام پر ہونے والی تمام جارحانہ کاروائیوں اور مکروفریب سے بھر پور چالوں کو تحسین کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔

اس عقیدت کے زیر اثر یہ لوگ اپنے سیاسی لیڈروں کے ظالمانہ اقدامات کو نہ صرف برداشت کرتے ہیں بلکہ انکا نہایت جارحانہ اور بے تکے انداز میں ان کا دفاع بھی کرتے ہیں۔
اپنے لیڈروں کے جھوٹ، بے شرمی، دوغلے پن، منافقت اور کسی ایک بات اور نظریے پر قائم نہ رہنے کے رویے کو سیاست کا نام دے کر اسکی داد دیتے ہیں۔

آپ اکثر ان کی زبانوں سے اس قسم کی باتیں سنیں گے کہ ۔۔۔

“اوہو یہ تو بڑی شیطنت ہے” ۔۔۔۔۔
“آپ اسکو بدمعاشی کہیں لیکن اس میں ذہانت پائی جاتی ہے” ۔۔۔۔
“یہ چال کتنی صفائی سے کی گئی ہے “۔۔۔۔۔۔۔۔
“اس فریب میں کتنی خوبصورتی ہے ، کتنی دیدہ دلیری ہے کیسی زبردست جسارت ہے”

آخر عوام کے اس طرز عمل کی کیا توجیح کی جا سکتی ہے؟

وہ رویہ جسے یہ لوگ عام زندگی میں نہایت مکروہ، گھناؤنا اور قابل نفرت سمجھتے ہیں سیاست کے میدان میں کیونکر لائق تحسین بن جاتا ہے؟
کیا آپ کو اندازہ ہو رہا ہے کہ جمہوریت نے کس خوفناک انداز میں عوام کی طرز فکر کو تبدیل کیا ہے!

تحریر شاہد خان

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here