پاکستان کا بیرونی قرضہ 8000 ارب جبکہ گردشی قرضہ (سرکولر ڈیٹ) 810 ارب کا ہندسہ عبور کر گیا ہے۔

0
1274
پاکستان کا بیرونی قرضہ 8000 ارب جبکہ گردشی قرضہ (سرکولر ڈیٹ) 810 ارب کا ہندسہ عبور کر گیا ہے۔ جو پاکستان کے تاریخ کی بلند ترین سطح ہے۔ 

فلحال صرف گردشی قرضے کی بات کرتے ہیں۔ 

جس وقت میاں محمد نواز شریف اقتدار میں آئے یہ قرضہ 480 ارب روپے تھا۔ خیال رہے کہ 480 ارب تک پہنچتے پہنچتے اس کو 66 سال لگے تھے۔ 

میاں محمد نواز شریف نے پارلیمنٹ اور اپوزیشن کو اعتماد میں لیے بغیر نہایت خطرناک انداز میں قومی خزانے کو تقریباً خالی کرتے ہوئے یک مشت اسکی ادائیگی کر دی۔

اس کے بعد 0 سے یہ دوبارہ 810 ارب تک یہ صرف 4 سال میں پہنچا ہے۔

ان 810 ارب میں سب سے بڑا حصہ میاں منشاء کا ہے جس کو نواز شریف کا فرنٹ مین کہا جاتا ہے۔

ان چار سالوں میں نہ صرف دنیا بھر میں سب سے مہینگے ریٹس پر آئی پی پیز سے بجلی خریدی گئی بلکہ نہایت چالاکی سے بجلی کے بقیہ تمام منصوبوں کو ناکام بناتے ہوئے پورے پاکستان کو ان آئی پی پیز کا مکمل محتاج بنا دیا گیا ہے۔

جب انہیں ضرورت ہوگی قرض پر تیل خرید کو آئی پی پیز کو فراہم کردینگے اور ملک میں مصنوعی طور پر لوڈ شیڈنگ ختم ہوجائیگی ۔۔ اور یہ قوم پر احسان کر سکیں گے کہ ہم نے تو لوڈ شیڈنگ ختم کر دی تھی ۔۔۔۔۔ 

تحریر شاہدخان

 
 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here