پاکستان میں “علم” کو جہالت کی طرح پھیلایا جا رہا ہے ۔۔۔۔۔۔ !

0
988
Sharing Services
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

پاکستان میں “علم” کو جہالت کی طرح پھیلایا جا رہا ہے ۔۔۔۔۔۔ !

سکول اور مدرسہ براہ راست ان نظریات پر حملہ آور ہیں جن پر پاکستان کا وجود کھڑا ہے۔

سکول دعوی کرتا ہے کہ دو قومی نظریہ(مسلم قومیت) باطل تھا۔ اس نے ہندوستان کو تقسیم کیا۔ 
مدرسے کا دعوی ہے کہ دو قومی نظریہ (مسلم قومیت) باطل تھا اس نے مسلمانوں کو تقسیم کیا۔

سکول قائداعظم کو سیکولر قرار دے رہا ہے۔ 
مدرسہ ان کو یہودی ایجنٹ سمجھتا ہے۔

سکول کسی سرخ انقلاب کے ذریعے پاکستان کو زیر و زبر کر کے اپنی مرضی سے دوبارہ اسکی تعمیر چاہتا ہے۔ 
جبکہ مدرسہ پاکستان کو زیر و زبر کرنے کی خونریز جنگ چھیڑ چکا ہے۔

سکولوں کے نزدیک پاک فوج قابل نفرت اور طالبان کی ساتھی ہے۔ 
مدرسہ پاک فوج کو واجب القتل قرار دیتا ہے کہ امریکہ کی ساتھی ہے۔

سکول نے عقلوں کو اتنا آزاد کر دیا کہ اب وہ کسی بھی چیز پر یقین کرنے کے لیے تیار نہیں حتی کہ خدا پر بھی شک کرنے لگے ہیں۔ 
مدرسے نے عقلوں کو اتنا قید کر دیا ہے کہ ان کو کچھ دکھائی ہی نہیں دیتا۔

سکول شعائر اسلام پر سوالات اٹھانے کو آزادی قرار دے رہا ہے۔ 
مدرسہ انکا قتل عام کرنے کی آزادی پر یقین رکھتا ہے۔

سکول ایک گلوبل دنیا کا سبق پڑھا رہے ہیں جہاں پاکستان کے وجود کی کوئی اہمیت نہیں۔ 
مدرسے ایک ایسی خلافت کا جس کے لیے پاکستان کو مٹانا ضروری ہے۔

اس ” علم ” کے نتیجے میں جو کچھ پیدا ہوا رہا ہے اس سے ریاست کو بچانے کے لیے ان سے جنگ کرنی پڑ رہی ہے۔

ابھی تو آپ پالا صرف مدرسے والوں سے پڑا ہے۔ اگر یہ سلسلہ نہ رکا تو جلد ہی سکولوں سے نکلنے والے جھتے آپ پر حملہ آور ہونگے۔

ہم اپنی فکری زوال کے عروج پر ہیں۔

تحریر شاہدخان


Sharing Services
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here