پاکستانی ” صحافی اور تجزیہ نگار امتیاز عالم صاحب کے دورہ چین میں چینی وزارت خارجہ کے ساتھ سوال و جواب

0
707

پاک چین تعلقات کو نشانہ بنانے کی کوشش ۔۔۔۔۔ ؟؟؟

” پاکستانی ” صحافی اور تجزیہ نگار امتیاز عالم صاحب کے دورہ چین میں چینی وزارت خارجہ کے ساتھ سوال و جواب ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

امتیاز عالم ۔۔۔۔ ” آپ نے جیش محمد کے مسعود اظہر کے خلاف اقوام متحدہ میں انڈیا کی قرار داد کو دو بار ویٹو کیا۔ کیا یہ آپکا دہرا معیار نہیں جب کہ آپ چند دن پہلے برکس میں دہشت گردی کی مذمت کر چکے ہیں۔ اس کے بعد آپ نے دو بار مسعود اظہر کے خلاف قرار داد ویٹو کی۔ کیا یہ آپکی منافقت نہیں ہے؟ ” ۔۔۔۔۔۔۔

چینی ایشین ڈیسک کا سربراہ ۔۔۔۔۔۔ ” جناب پہلی بات تو یہ ہے کہ چین مسعود اظہر کو دہشت گرد نہیں سمجھتا۔ دوسری بات یہ کہ برکس کوئی ایسا معاہدہ نہیں جس میں ہم یہ فیصلہ کریں کہ فلاں دہشت گرد ہے اور فلاں نہیں ہے۔ اور تیسری بات یہ ہمارا دہرا معیار نہیں بلکہ ہماری قومی ترجیحات ہیں جن کو مد نظر رکھ کر ہم فیصلے کرتے ہیں” ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

امتیاز عالم کا یہ سوال سن کر ساتھ بیٹھے ہکا بکا پاکستانی صحافیوں میں سے ایک صحافی محمد اسلم خان چوپال نے معاملے کو سنبھالنے کے لیے چینی وفد سے فوراً سوال کیا کہ بھارت کی دوسرے ممالک میں دراندازی اور دلائی لامہ کے ذریعے چین کو نشانہ بنانے پر آپ کیا کہتے ہیں۔
اس پر چینی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ بھارت کا یہ طرز عمل افسوسناک ہے۔

بھارت کے حوالے سے محمد اسلم خان کا یہ سوال سن کر امتیاز عالم تنک گئے اور فوراً اگلا سوال داغ دیا۔

امتیاز عالم ” یہ جو ایسٹ ترکمانستان موومنٹ ہے ( چین میں دہشت گردی کرنے والی تنظیم ) اس میں آپ پاکستان کے کردار سے مطمئن ہیں؟ “۔۔۔۔۔۔۔

چینی ایشین ڈیسک سربراہ ۔۔۔۔۔۔۔ ” ہم نہ صرف پاکستان سے خوش ہیں بلکہ ہمیں پاکستان سے دوستی پر فخر ہے۔ ہم نے امریکہ پر بھی زور دیا ہے کہ وہ پاکستان کو اعتماد میں لیے بغیر دہشت گردی کے خلاف جنگ نہیں جیت سکتا ” ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

امتیازعالم جنگ گروپ اور جیو کے معروف تجزیہ نگار اور صحافی ہیں اور بدنام زمانہ سیکولر تنظیم سیفما کے رکن۔ ان کو موجودہ حکومت نے چند دن پہلے کچھ صحافیوں کے ہمراہ چین بھیجا جہاں وہ یہ گل کھلا کر آگئے۔

امتیاز عالم کی اس بکواس پر محمد اسلم خان چوپال کی اس سے وہیں پر تلخ کلامی بھی ہوگئی تھی۔ اس ساری کانفرس اور گفتگو کی ویڈیو اور آڈیو رکاڈنگز موجود ہیں اور اس کے ساتھ جانے والے کئی صحافیوں کی گواہی بھی ۔۔۔

پاکستان کے مفادات اور پاک چین تعلقات پر ان حالات میں اس حملے کو آپ کیا کہیں گے؟

تمام ثبوتوں کی موجودگی میں اس غدار اور ملک دشمن کو کسی قسم کی کوئی سزا مل سکے گی ؟؟؟

تحریر شاہدخان (بحوالہ اوریا مقبول جان حرف راز پروگرام )

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here