پاڅون تحریک قیام اور اغراض و مقاصد

0
110

” پاڅون تحریک ” قیام اور اغراض و مقاصد

 پاڅون پشتو کا لفظ ہے جس کا مفہوم ہے اٹھنا یا رائزنگ اپ۔
 اسکا زیادہ بہتر مفہوم واضح کرتا ہے۔
اردو میں اس کو پاثون 

تحریک کا علامتی نشان مشہور زمانہ ” یادگار وفا ” ہے۔ یادگار وفا ان غیرت مند پشتونوں کی یاد میں بنایا گیا تھا جنہوں نے ہندو قیادت ( نہرو ) کو دھتکارا تھا۔

اس تحریک کو اٹھانے والے سوشل میڈیا پر موجود چند محب وطن پشتون ہیں جو دوبارہ پشتونوں کو کسی جنگ کی طرف جانے سے روکنا چاہتے ہیں۔

اس لیے اس تحریک کا سب سے پہلا اور بنیادی مقصد ” امن ” ہے۔
” پاثون” ہر اس شخص اور ہر اس گروہ یا طاقت کی مخالفت کرے گی جو کسی بھی طرح پشتونوں کو جنگ پر ابھارے گی یا پشتونوں پر جنگ مسلط کرے گی۔

تاہم ” پاثون ” کو سوشل میڈیا پر محض دو ہفتوں میں پشتونوں کی جانب سے جتنی پزیرائی ملی اس کے بعد فیصلہ کیا گیا ہے کہ ہم سوشل میڈیا سے باہر بھی کام کا آغاز کریں اور پشتونوں کے دیگر مسائل پر بھی توجہ دیں۔
کم از کم فاٹا کی حد تک۔

ہمیں مسلسل کمنٹس اور انباکس پیغامات مل رہے ہیں کہ آپ لوگ صرف پی ٹی ایم پر تنقید کر رہے ہیں لیکن اپنا ایجنڈا نہیں بتا رہے کہ آپ پشتونوں کے لیے کیا کرنا چاہتے ہیں؟

آج اس حوالے سے بھی آپکو تھوڑا سا بتا تے ہیں۔

ہم بنیادی طور پر چار ایشوز پر کام کرنا چاہتے ہیں۔

امن، تعلیم و تربیت، صحت اور انفاسٹرکچر

ان پر کام کیسے کرنا ہے یہ ہم آپ کے ساتھ ملکر فائنل کرینگے ان شاءاللہ۔ تاہم جو ہمارا آئیڈیا ہے وہ آپ سے شیر کر لیتے ہیں۔

الف ۔۔ امن

امن کا آغاز ہی اس سے ہوگا کہ پشتون دوبارہ کسی جنگ کا حصہ نہ بنیں۔
ایسے لوگ، جماعتیں یا گروہ جو پشتونوں کو جنگ پر اکسا رہے ہیں ان کے خلاف ریاست سخت سے سخت ایکشن لے۔
وہ لوگ جو بے قصور ہیں اور ریاستی اداروں کی تحویل میں ہیں ان کو رہا کیا جائے۔ ان میں ٹی ٹی پی کے ان لوگوں کی بھی ہم رہائی کا مطالبہ کرینگے جو تنظیم سے تو وابستہ تھے لیکن کبھی کسی کاروائی کا حصہ نہیں رہے۔
اسی طرح جو افغانستان بھاگے ہوئے ہیں ان کے لیے بلوچ فراریوں کی طرح واپسی کی راہ نکالی جائے۔
بارودی سرنگوں کی صفائی کا عمل جاری رکھا جائے اور ساتھ ساتھ عوام کو باخبر رکھا جائے کہ کتنا کام ہوگیا ہے اس پر۔
باڑ ضرور لگائی جائے لیکن دونوں طرف کے وہ پشتون جو کاروبار کرتے ہیں یا جن کی بہت قریبی رشتے داریاں ہیں ان کے لیے آنے جانے اور تجارت کرنے میں آسانیاں پیدا کی جائیں۔
افغانستان کے قریب سرحدی علاقوں میں کم از کم اتنی فوج لازمً رکھی جائے کہ وہاں سے دوبارہ اس خطے میں کسی قسم کی دہشت گردی نہ پنپ سکے۔
ایسے افغان مہاجرین جو سوشل میڈیا پر یا سوشل میڈیا سے باہر کسی بھی طرح پاکستان دشمن سرگرمیوں میں ملوث ہوں انہیں واپس افغانستان بھیج کر پاکستان میں بلیک لسٹ کر دیا جائے۔

ب ۔۔ تعلیم و تربیت
تباہ شدہ سکولوں کا قیام
فاٹا میں کچھ عرصہ تک بچوں کو مفت کتابوں کی فراہمی

ج ۔۔۔ صحت
جہاں جہاں صحت کی بنیادی سہولیات موجود نہیں ان کی طرف توجہ مبذول کروانا اور جہاں تک ہوسکے، مقامی لوگوں کے ذریعے وہاں وہاں کچھ کام کا انعقاد کرنا، تاکہ ایک سائیکل شروع ہوسکے اور ارباب اختیار کو بھی اس طرف متوجہ کیا جاسکے

د ۔۔۔ انفاسٹرکچر
ان تمام تباہ کاریوں کو جو افغانستان کی طرف سے آنے والی ایک طویل پراکسی جنگ کے نتیجے میں وقوع پذیر ہوئیں اور جن کی طرف ابھی تک حکومتی سطح پر اس طرح سے تعمیر نو کا کام نہیں شروع ہوا جیسا کہ اس کا حق تھا،اس پر توجہ مبذول کروانا اور وہ تمام لوگ جو اس کام میں آگے آسکتے ہیں ان کو ایک کڑی میں پرونا۔

ریاست فاٹا کو اگلے دس سال میں ہزار ارب روپے سے زائد کے فنڈز دے گی۔ اگر یہ فنڈز مناسب انداز میں صرف کیے گئے تو فاٹا کا نقشہ بدل سکتا ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ فاٹا فنڈز کی تقسیم اور اس کے بدلے میں ہونے والی تعمیر و ترقی کے اوپر ایک گہری نظر رکھی جائے۔

یہ منشور فائنل یا حتمی نہیں ہے۔
یہ آپ کی تحریک ہے۔ آپ تجاویز دیں تو ان میں مناسب ردوبدل کر دیا جائیگا۔
ان شاءاللہ۔

” پاثون تحریک” کے حامی پاکستان کو پشتونوں کا ملک سمجھتے ہیں۔ دنیا کا واحد ملک جس پر پشتون اپنی ملکیت کا دعوی کر سکتے ہیں اور جس کا کوئی کونا ایسا نہیں جہاں پشتون نہ ہوں۔
ہم سمجھتے ہیں کہ پنجابی، سندھی، بلوچی، مہاجر اور کشمیری ہمارے بھائی ہیں۔ اور ان کے ساتھ ہم اپنا اخوت کا رشتہ مزید مضبوط کرینگے ان شاءاللہ۔

ہم نے اپنے پیارے پاکستان کو خراب نہیں بلکہ مضبوط کرنا ہے۔

آئیں ہمارا ساتھ دیں
امن کے لیے
خوشحالی کے لیے

پاثون تحریک کا حصہ بنیں!۔

اللہ آپ سب کا حامی و ناصر ہو
پاکستان زندہ باد
پشتون پائندہ باد

نوٹ ۔۔۔۔۔۔۔ ہم لوگ بھرپور اور منظم انداز میں آگے بڑھنا چاہتے ہیں اس لیے ہمارے کچھ پشتون بھائیوں نے اس کار خیر میں آگے بڑھ کر جس طرح کام کو سنبھالا وہ قابل ستائش ہے۔
اس پیج کے علاوہ ہمارے کئی ذیلی پیجز بھی ہیں۔
ٹویٹر اور یوٹیوب چینل کا لنک کمنٹ میں دے رہا ہوں۔ ٹویٹر فالو کیجیے اور یوٹیوب سبسکرائب کیجیے تاکہ آپ روز تازہ ترین ویڈیوز ملاحظہ کر سکیں۔

ہم ان شاءاللہ پشتون دانشوروں، ریسرچرز، شعرا اور صحافیوں کو بھی ایک پلیٹ فارم پر جمع کرینگے اور ان کی خدمات سے مستفید ہونگے ان شاءاللہ

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here