ٹیپو سلطان نے گوروں کے تسلط سے بچنے کی جنگ لڑی نہ کہ نفاذ شریعیت کی تو کیا وہ بھی وطن پرست تھا؟

0
285

یہ “وطن پرستی” کی نئ اصطلاح بھی حیرت انگیز ہے !

صلاح الدیں ایوبی نے یورپ کے خلاف آزادی کی جنگ لڑی تھی نہ کہ نفاذ شریعت یا اپنی ریاست کے خلاف بغاوت کی تو کیا صلاح الدین ایوبی وطن پرست تھا؟

ٹیپو سلطان نے گوروں کے تسلط سے بچنے کی جنگ لڑی نہ کہ نفاذ شریعیت کی تو کیا وہ بھی وطن پرست تھا؟

اسامہ بن لادن نے افغانستان میں روس کے خلاف آزادی کی جنگ لڑی تھی نفاذ شریعیت کی نہیں تو کیا اسامہ بن لادن وطن پرست تھا ؟

ملا عمر بار بار یہ اعلان کرتا ہے کہ ہم امریکہ سے آزادی کی جنگ لڑ رہے ہیں تو کیا ملا عمر وطن پرست ہے ؟

کیا مسلمانوں کی ریاست مسلمانوں اور اسلام سے الگ کوئی شے ہے ؟

مسلمانوں کی ریاست کی حفاظت کے لیے پہرہ دینے والے کی اتنی فضیلت کیوں بیان کی گئی ہے ؟

اسلام بذات خود مسلمانوں کی ریاست کے بارے میں کتنا حساس ہے ذرا ملاحظہ کیجیے !!

حضرت ابو ہریرہ (ر) بیان کرتے ہیں کہ حضور (ص) نے ارشاد فرمایا ۔۔۔

” جو شخص مسلم ریاست کے نظم اجتماعی سے نکل جائے (یعنی اسکی اتھارٹی کو چیلنج کرے ) اور اجتماعیت کو چھوڑ کر الگ گروہ بنا لے ۔ پھر مر جائے تو سمجھ لیجیے کہ جاہلیت کی موت مرا ۔ اور جو شخص اندھی تقلید میں کسی کے زیر قیادت جنگ کرے یا کسی عصبیت کی بنا پر غضب ناک ہو یا عصبیت کی طرف دعوت دے یا عصبیت کی خاطر جنگ کرے اور مارا جائے تو وہ جاہلیت کی موت مرے گا ۔ اور جس شخص نے میری امت پر خروج کیا اور ( ریاست سے بغاوت کرکے الگ جتھے بنا کر بلا امتیاز) نیک اور برے سب لوگوں کو قتل کیا کسی مومن کا لحاظ کیا نہ کسی سے کیا ہوا عہد پورا کیا اس کا مجھ سے کوئی تعلق نہیں اور نہ ہی میرا اس سے کوئی تعلق ہے ۔ ( یعنی وہ میری امت نہیں نہ ہی میں اسکے لیے رحیم و شفیع رہونگا )

مسلم ، صحیح ، کتاب الا مارہ ، باب وجو ب ملازمہ جماعہ المسلمین عند ظہور الفتن 14477،1476 -3 ۔۔ رقم 1848

یہ ایک صحیح حدیث ہے جسکا انکار ممکن نہیں اور یہ حدیث ایمان والوں کے رونگٹے کھڑے کر دینے کے لیے کافی ہے ۔ اس حدیث کو رد کرنے یا اسکی کوئی بہت غلط تاویل کرنے سے پہلے یہ ضرور سوچ لیجیے کا مرنا بھی ہے اور اللہ کے سامنے حاضر بھی ہونا ہے ۔

جب مسلمانوں کی ریاست کا دفاع ایک اتنا اہم امر ہے اور اس سے بغاوت پر اتنی سخت وعیدیں ہیں تب اسکا دفاع کرنے والے اور اس سے باغیوں کے متعلق فیصلہ کرنا کیا مشکل ۔ ہمارے نادان دوست آج بنگلہ دیش کی بغاوت کو بھی کسی جہاد سے تعبیر کرتے ہیں اور اس پر احمقانہ قسم کے سوالات اٹھاتے ہیں جبکہ شیخ مجبب اور مکتی باہنی کا انڈیا کے لیے کام کرنا ثابت ہے !!!

اور پاکستان کا تو معاملہ ہی بہت خاص ہے کہ وہ کفر کے مشترکہ نشانے پر ہے ۔ امریکہ محض جاسوسی کے لیے دنیا بھر میں خرچ کی گئی رقوم میں سے آدھی صرف پاکستان کے خلاف خرچ کرتا ہے ۔ تبلیغ و جہاد کر مرکز پاکستان ہے جہاں سے نہ صرف پوری دنیا میں تبلیغ ہوتی ہے بلکہ افغانستان ، کشمیر اور فلسطین تک جہاد کیا جاتا ہے ۔ واحد اسلامی ایٹمی قوت ہے ۔ اسلامی ممالک میں سب سے طاقتور فوج رکھتا ہے ۔ انڈیا اور اسرائیل ایک سے زائد بار پاکستان کو ہی اپنا سب سے بڑا دشمن قرار دے چکے ہٰیں ۔۔۔۔!!

یاد رکھیے اس پاکستان سے وفادری اسلام ہی سے وفاداری ہے اور اس پاکستان سے غداری اسلام ہی سے غداری ہے ۔ جو ان ساری چیزوں کو نظر انداز کر کے اپنی ضد پر اڑا رہے گا اسکا مقابلہ اللہ سے ہوگا جس سے کوئی نہیں جیت سکتا ۔۔۔۔!!!!

تحریر شاہد خان

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here