میجر جنرل آصف غفور کا بطور ڈی جی آئی ایس پی آر آخری دن ڈیفنس رپورٹرز سے ملاقات

0
25

میجرجنرل آصف غفور نے کہا کہ پاکستان نے 2 دہائیوں میں دہشتگردی کیخلاف بقا کی جنگ لڑی۔ میڈیا کا افواج پاکستان کی کامیابی میں اہم کردار رہا۔ میڈیا نے افواج پاکستان اور شہیدوں کے لواحقین کے دل جیتے۔ اس جنگ میں ڈیفنس رپورٹرز نے افواج کا بھرپور ساتھ نبھایا۔ ڈیفنس رپورٹرز میڈیا میں میری بنیادی ٹیم رہے۔ انہوں نے بھرپور طریقے سے افواج پاکستان کی رپورٹنگ کی اور افواج پاکستان کا جذبہ مضبوط کیا۔
آخری دس روز میں پاکستان کو ختم کرنے کی بھارتی گیدڑ بھبھکی کا منہ توڑ جواب دیتے ہوئے کہا ہے کہ جنگ مسلط کی گئی تو بھرپور جواب دینگے۔

بھارتی حکومت اور ملٹری لیڈرشپ کے بیانات غیر ذمہ درانہ ہیں۔ افواج پاکستان اور عوام آپ کو سرپرائز دیں گے۔ جنگ شروع آپ کریں گے لیکن ختم ہم کریں گے۔

بھارتی حکومت اور ملٹری لیڈرشپ غیر ذمہ دارانہ بیانات دے رہے ہیں۔ بھارت 8 ملین کشمیریوں کو شکست نہ دے سکا، 207 ملین پاکستانیوں کو کیسے شکست دے سکتا ہے ؟؟؟

فروری 2019ء میں بھارت جنگ کی دستک دے چکا تھا تاہم افواج پاکستان کے موثر جواب نے امن کا راستہ ہموار کیا۔ خطے میں امن کیلئے آرمی چیف کے تاریخی اقدامات رہے۔ جنرل قمر جاوید باجوہ کی حکمت عملی نے جنوبی ایشیا کو بڑی تباہی سے بچایا۔

میجر جنرل آصف غفور کا کہنا تھا کہ تینوں افواج نے خود کو قابل فورس کے طور پر منوایا جبکہ پاکستانی قیادت نے جنگ کے خطرے کو احسن طریقے سے نمٹایا۔ ردالفساد سب سے مشکل آپریشن اور دائمی امن کیلئے اہم مرحلہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ افواج اسلحے کے زور پر نہیں، جذبہ ایمانی اور عوام کی حمایت سے لڑتی ہیں۔ کوئی دنیاوی طاقت متحد قوم کو شکست نہیں دے سکتی۔ آرمی چیف نے پاکستان کی سلامتی اور ترقی کو ہمیشہ مقدم رکھا اور اقوام عالم میں پاکستان کا مقام بلند کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ بھارتی قیادت مقبوضہ کشمیر میں ظلم وستم بند کرے۔ مقبوضہ کشمیر میں لگی آگ پورے خطےمیں پھیل سکتی ہے۔ دنیا کو بھی جنگ کے خطرے کا ادراک ہونا چاہیے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے واضح کیا کہ پاکستانی سول اور ملٹری لیڈرشپ خطے میں امن کی خواہاں ہے۔ جنگ شروع بھارت کریگا لیکن ختم پاکستان کریگا

#PakistanCooperativeOrganization

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here