مشہور اینکر پرسن کاشف عباسی کے نام سے ایک جعلی ٹویٹر اکاؤنٹ سے ٹویٹ کر دی گئی کہ جنرل رضوان اختر نے 32 ارب روپے کی کرپشن کی ہے اس لیے اس کو جبری ریٹائرڈ کیا جا رہا ہے۔ 

ایسی صورت حال میں پاک فوج کی یہی روایت ہے کہ سینیر افسر استعفی دے دیتے ہیں۔ یہی جنرل رضوان اختر نے بھی کیا۔ ایک دو اخبارات نے تو انکا ریزگنیشن لیٹر بھی شائع کیا ہے۔ 

0
2072

جنرل رضوان اختر پر لگائے گئے الزمات کی حقیقت ۔۔۔۔۔۔۔۔ !

مشہور اینکر پرسن کاشف عباسی کے نام سے ایک جعلی ٹویٹر اکاؤنٹ سے ٹویٹ کر دی گئی کہ جنرل رضوان اختر نے 32 ارب روپے کی کرپشن کی ہے اس لیے اس کو جبری ریٹائرڈ کیا جا رہا ہے۔ 

کاشف عباسی نے فوری طور پر اپنے اصل اکاؤنٹ سے اسکی تردید کر دی۔ 

لیکن مریم نواز اور ایم کیو ایم لندن کی سوشل میڈیا ٹیم نے اس پر خوب پراپیگینڈا کیا اور وہی کیا جو راحیل شریف کی ریٹائرمنٹ کے وقت کیا گیا تھا۔

جبکہ معاملے کی اصلیت صرف اتنی ہے کہ جنرل رضوان اختر سے جونیر کچھ افسر ان سے کچھ اونچی پوزیشنز پر تعئنات ہوگئے تھے۔

ایسی صورت حال میں پاک فوج کی یہی روایت ہے کہ سینیر افسر استعفی دے دیتے ہیں۔ یہی جنرل رضوان اختر نے بھی کیا۔ ایک دو اخبارات نے تو انکا ریزگنیشن لیٹر بھی شائع کیا ہے۔

سوائے اس جعلی ٹویٹر اکاونٹ کے مذکورہ خبر کا اور کوئی سورس بھی موجود نہیں۔ لیکن آفرین ہے اس قوم پر ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

بلا شبہ ہم محسن کش قوم ہیں!

تحریر شاہدخان

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here