لیکن ن لیگ اس سارے معاملے کو صرف ایک شخص تک ہی کیوں محدود کرنا چاہتی ہے؟

0
559

سینکڑوں بچوں کا ریپ ہوا اور کچھ میڈیا رپورٹس کے مطابق ہزاروں کا۔

کیا واقعی یہ سب صرف ایک شخص نے کیا محض مزہ لینے کے لیے؟

اس بات کو کون الو کا پٹھا تسلیم کر سکتا ہے۔ یقیناً یہ سارا کام منظم طریقے سے کیا جا رہا ہے اور اس کے پیچھے پورا گینگ ہے اور بچوں کی ویڈیوز بیچی جا رہی ہیں تو لین دین کے لیے بینک اکاؤنٹس بھی ہونگے۔

ڈی این اے رپورٹ کے مطابق صرف زینب کو ایک سے زائد لوگوں نے نشانہ بنایا۔

لیکن ن لیگ اس سارے معاملے کو صرف ایک شخص تک ہی کیوں محدود کرنا چاہتی ہے؟

شاہد مسعود کے پاس انفارمیشن آئی۔ اس نے بیان کر دی اور سپریم کورٹ سے اپیل کی۔ سپریم کورٹ نے شواہد لے کر تحقیقات کے لیے ن لیگ کے ماتحتی میں کام کرنے والی ایف آئی اے اور سٹیٹ بینک کے سپرد کر دیں۔ انہوں نے فرمایا کہ رپورٹ غلط ہے۔

یاد رہے کہ قصور کے اپنوں لوگوں کے مطابق اس کام میں مقامی ن لیگی ایم پی اے اور ایم این اے ملوث ہے۔

لیکن ایف آئی اے رپورٹ کے بعد شاہد مسعود تاریخ کا سب سے جھوٹا صحافی قرار پایا۔

کچھ بیغرتوں نے یہاں تک لکھ دیا کہ ” بڑی چس آگئی شاہد مسعود جھوٹا ثابت ہوا” ۔۔

شرم ان کو نہیں آتی۔ اصل تکلیف ان کو یہ ہے کہ شاہد مسعود نے نہ صرف اس کے پیچھے کام کرنے والی گینگ کی نشاندہی کی ہے جو آج نہیں تو کل ایکسپوز ہو ہی جائیگا بلکہ منی لانڈرنگ کے ایک نئے طریقے کا انکشاف بھی کیا۔

وہ ہے بٹ کوائن۔ جتنے مرضی خرید لیں اور باہر جاکر بیچ دیں اللہ اللہ خیر سلا۔ کہیں کوئی پکڑ نہیں۔ کوئی ریکارد نہیں۔ اس پر ان کو زیادہ تکلیف ہوئی ہے۔

شاہد مسعود میرا پسندیدہ تجزیہ کار ہے۔ بدمعاشیہ کے خلاف اس نے اکیلے جتنا کام کیا ہے یہ سارے ملکر بھی اتنا نہیں کر سکتے۔

اسکی مقبولیت چیک کرنی ہو تو جیو کے جعلی سرویز کو چھوڑ کر صرف یوٹیوب پر اس کے ہر ٹاک شوز کی ” ویوز” چیک کریں اور پھر باقیوں سے اسکا موازنہ کر لیں۔

سپریم کورٹ بھی کمال ہے۔ شاہد مسعود دعوی کر رہا ہے کہ ن لیگ ملوث ہے اور سپریم کورٹ ن لیگ سے ہی تحقیقات کروا رہی ہے۔

میرے خیال میں قصور والے معاملے میں تحقیقات کا حکم پاک فوج کو دیا جائے پھر دیکھنا کیسے دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوتا ہے۔

باقی شاہد مسعود صاحب کے لیے ویلڈن ۔۔۔ جو کچھ آپ نے اب تک اس ناشکری قوم کے لیے کیا۔

تحریر شاہدخان

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here