فضل الرحمن اور اس کے پیروکار اس وقت عصبیت کا جھنڈا بلند کر چکے ہیں۔ اس عصبیت نے صرف چند دنوں میں بلوچستان میں 20 سے زائد مسلمانوں کی جانیں لے لیں۔

0
1551

عصبیت کا جھنڈا ۔۔۔۔۔۔ !

یہ سکرین شاٹ ابھی ایک دوست کی ٹائم لائن پر دیکھی۔ یہ شخص فضل الرحمن کا انتہائی متحرک کارکن ہے۔ 

حضرت جبیر بن مطعم رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا کہ ” جس نے عصبیت کی دعوت دی وہ ہم میں سے نہیں جس نے عصبیت پر لڑائی کی وہ ہم میں سے نہیں جس کی موت عصبیت پر ہوئی وہ ہم میں سے نہیں ہے ” ۔۔۔۔ 

اسی طرح حضرت ابوہریرہ سے بھی ایک روایت موجود ہے کہ “جو شخص اندھی تقلید میں کسی کے جھنڈے تلے عصبیت پر غصہ کرتے ہوئے مارا گیا اور وہ جنگ کرتا ہو عصبیت کے لئے تو وہ میری امت میں سے نہیں ہے ” ۔۔۔۔

فضل الرحمن اور اس کے پیروکار اس وقت عصبیت کا جھنڈا بلند کر چکے ہیں۔ اس عصبیت نے صرف چند دنوں میں بلوچستان میں 20 سے زائد مسلمانوں کی جانیں لے لیں۔

کچھ عرصہ پہلے جب پنجاب میں غیر ملکی ایجنسیوں نے لسانی جنگ کروانے کے لیے نفرت انگیز پمفلٹس بانٹے تو انکی تشہیر میں جے یو آئی کے علماء اور مفتیان پیش پیش تھے۔ سب کی ٹائم لائنز پر وہی پمفلٹس اور ساتھ ہی پنجاب میں پشتونوں پر ہونے والے ” ظلم ” کی داستانیں نظر آرہی تھیں۔

اگر انہیں عصبیت کے خلاف احادیث کا حوالہ دیں تو جواباً یا گالی یا تاویل ۔۔۔

کیسے علماء ہیں یہ اور کیسے ان کے ماننے والے؟ سوائے فنتے کے ان کے پاس کچھ نہیں!

سنا ہے آخری دور کے علماء سے فتنے اٹھا کرینگے اور پھر انہی میں لوٹ جایا کرینگے۔

یہ باطل پرست زانی اور شرابی ملا اور اس کے اندھے بہرے اور بے عقل پیروکار عصبیت کی آگ میں ہر چیز کو جلا کر بھسم کر دینا چاہتے ہیں۔

یہ بھی سنا ہے اسلام عصبیت کی طرف بلانے والوں کی گردن اڑانے کا حکم دیتا ہے۔ کاش کوئی ہوتا جو ان ظالموں پر اللہ کا یہ حکم نافذ کرتا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ !

تحریر شاہدخان

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here