فراڈ، دھوکہ دہی،خزانے کو بھاری نقصان اور ملکی سکیورٹی کو سنگین خطرات سے دوچار کرنیوالی کیوموبائل کمپنی اب دوبارہ سمگل شدہ موبائل فون مارکیٹ میں فروخت کرنے جا رہی ہے

0
3283

فراڈ، دھوکہ دہی،خزانے کو بھاری نقصان اور ملکی سکیورٹی کو سنگین خطرات سے دوچار کرنیوالی کیوموبائل کمپنی اب دوبارہ سمگل شدہ موبائل فون مارکیٹ میں فروخت کرنے جا رہی ہے

اربوں کے کیو موبائل فون سمگلنگ سکینڈل میں ملوث ڈیجی کام ٹریڈنگ پرائیویٹ لمیٹڈ کمپنی اور اسکے مالکان کیخلاف درج مقدمات ختم اور ضبط شدہ موبائل فون کسٹمز حکام کی ملی بھگت سے صرف 40 کروڑ روپے کی ادائیگی پر ریلیز کرنے کے احکامات جاری کردئیے گئے ہیں

ڈیجی کام ٹریڈنگ کمپنی نے 31 اکتوبر2017 کو گرین چینل کے ذریعے ایل ای ڈی لائٹس کے نام پر کیو موبائل فون کے کنٹینزر کلیئر کروائے ۔ کیوموبائل فون پی ٹی اے کی منظوری اور آئی ایم ای آئی نمبر رجسٹرڈ کروائے بغیر فراڈ کے ذریعے پاکستان لائے گئے ۔

ڈیجی کام ٹریڈنگ کمپنی نے کسٹمز حکام کی ملی بھگت سے سمگلنگ کے دوران پکڑے گئے موبائل فون ریلیز کروانے اور درآمد کی دوبارہ اجازت حاصل کرنے کیلئے ایک مرتبہ پھر فراڈ کا سہارا لیا ہے ۔ کیو موبائل کی دوبارہ فروخت سے لاکھوں موبائل فون صارفین، ڈسٹری بیوٹرزاور ریٹیلرز کو اربوں کے نقصان کا دوبارہ سامنا کرنا پڑسکتا ہے ۔

کسٹمز کے اینٹی سمگلنگ سکواڈ نے یکم نومبر کو چھاپہ مارا جس کے نتیجے میں سمگل شدہ موبائل فون کا کنٹینر پکڑا گیا ۔ یہ کنٹینرز 31 اکتوبر2017 کو فراڈ اور دھوکہ دہی کے ذریعے ڈیجی کام ٹریڈنگ نے گرین چینل سے کلیئر کروائے تھے ۔ کسٹمز حکام نے مزید اطلاع ملنے پر کراچی کے مختلف علاقوں اور لاہور میں چھاپے مار کر مجموعی طور پر 3 لاکھ 17 ہزار موبائل فون قبضے میں لئے جن کی مالیت 2 ارب سے زائد ہے ۔

کیوموبائل فون فروخت کرنے والی کمپنی نے چالاکی کا مظاہرہ کرتے ہوئے 2 نومبر 2017 کی تاریخ کا ایک لیٹر متحدہ عرب امارات سے حاصل کیا جس میں موقف اختیار کیا گیا کہ شپر کی غلطی کے باعث کنٹینرز کی مس ڈیکلریشن فائل ہوئی۔ مس ڈیکلریشن کے باعث کنٹینرز میں موبائل فون کے بجائے ایل ای ڈی لائٹس ظاہر کی گئیں، ایل ای ڈی لائٹس ظاہر کرنے کا مقصد کروڑوں کے ٹیکس اور پی ٹی اے کی منظوری سے بچنا تھا ۔
اگر ڈیجی کام ٹریڈنگ کے شپر سے غلطی سرزد ہوئی تھی تو 30 اکتوبر کو کلیئر ہونیوالے کنٹینرز جو ڈی ایچ میں ایک بنگلے میں کھول کر موبائل فون چھپائے گئے تھے ، ڈیجی کام کمپنی نے فوری طور پر متعلقہ کسٹمز حکام کو غلط ڈیکلریشن سے متعلق آگاہ کیوں نہ کیا۔

ڈیجی کام کمپنی 7برس سے مختلف طریقوں سے فراڈ میں ملوث چلی آرہی ہے
اس سے قبل بوگس کلیم کے ذریعے کروڑوں کا انکم ٹیکس ریفنڈ حاصل کرنے میں ملوث کیو موبائل کمپنی نے خزانے کو بھاری نقصان پہنچایا۔ اربوں کا ٹیکس بچانے کیلئے کیوموبائل نے امپورٹر سے مینوفیکچرکا روپ اختیار کیا ۔ انسپکشن ٹیم نے تحقیقات کے بعد کیوموبائل کمپنی کی مینوفیکچرنگ رجسٹریشن منسوخ ، کمپنی کو بلیک لسٹ اورقومی ادارے کیساتھ فراڈ کرنے پر قانونی کاروائی کی سفارش کی تھی۔۔

کیوموبائل کمپنی امپورٹر سے مینوفیکچرنگ کا درجہ حاصل کرنے کی اہل ہی نہیں تھی۔ ایک انسپکٹر کے دورے سے کیوموبائل کو امپورٹر سے مینوفیکچرر کا درجہ دیدیا گیا۔ کیوموبائل کو 2009 سے 2013 تک کمرشل امپورٹر ڈکلیئر کیا گیا ۔ ملکی اور عالمی مارکیٹ میں کوئی بھی ڈسٹری بیوٹر عالمی معاہدے کے بغیر اور انتہائی سخت کوالٹی کنٹرول کے معیار کے بغیر موبائل فون کی اسمبلنگ اور ویلیو ایڈیشن میں شریک نہیں کیا جاسکتا ۔

کیوموبائل کمپنی کے اقدامات کے باعث ٹیکس پر بھاری منفی اثرات مرتب ہوئے جس کے باعث لازم ہے کہ نہ صرف 2014 بلکہ دیگر سالوں کے ریکارڈ کی بھی سخت فزیکل تصدیق کی جائے
حجاب رندھاوا

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here