شہباز شریف فیملی کیخلاف منی لانڈرنگ کیس،اہلیہ اوربیٹی کےوارنٹ گرفتاری جاری


شہباز شریف کی فیملی کیخلاف منی لانڈرنگ کیس میں ان کی اہلیہ نصرت شہباز اور بیٹی رابعہ عمران کے وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے گئے ہیں۔

احتساب عدالت نے دونوں خواتین سمیت دیگر ملزمان کو 29 ستمبر کو پیش ہونے کا حکم دیدیا ہے۔ شہباز شریف نے کہا ہے کہ حکومت انتقام کے علاوہ کچھ نہیں کر رہی۔

شہباز شریف خاندان کے خلاف منی لانڈرنگ کے ریفرنس پر احتساب عدالت کے جج جواد الحسن نے سماعت کی۔ لیگی صدر عدالت میں پیش ہوئے۔ جیل کے ڈاکٹر نے عدالت کو بتایا کہ حمزہ شہباز کورونا وائرس کا شکار ہیں، اس وجہ سے ان کو پیش نہیں کیا گیا۔ انہوں نے اس بارے میں میڈیکل رپورٹس عدالت میں جمع کروائیں۔ عدالت نے حمزہ شہباز کی میڈیکل رپورٹس کا جائزہ لیتے ہوئے حاضری سے استثنا دے دیا۔

شریف فیملی کے وکیل امجد پرویز نے استدعا کی کہ کیس کا ابتدائی مرحلہ ہے۔ شہباز شریف کے اہلخانہ کو حاضری سے استثنا دیا جائے۔ عدالت نے باور کرایا کہ قانون کے مطابق شریک ملزموں کو پیش ہونا ہے۔

عدالت نے جویریہ علی کی حاضری معافی کی درخواست پر نیب سے جواب طلب کیا تو نیب پراسیکیوٹر نے جواب جمع کرانے کے لیے مہلت مانگ لی۔

شہباز شریف کی اہلیہ نصرت شہباز اور بیٹی رابعہ عمران عدالت میں پیش نہ ہوئیں۔ احتساب عدالت نے دونوں کے قابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کرتے ہوئے انھیں آئندہ سماعت پر پیش ہونے کا حکم دیا۔

عدالت نے شہباز شریف کی بیٹی جویریہ علی کی ایک دن کی حاضری معافی منظور کرتے ہوئے ریفرنس پر سماعت 29 ستمبر تک ملتوی کر دی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here