سعودی عرب کو بچانا ہوگا اور یہ کام پاکستان کر سکتا ہے!

0
688

سعودی عرب میں پاک فوج کے دستے بھیجے جانے چاہئیں!

خانہ کعبہ اور مسجد نبوی کی وجہ سے سعودی عرب سے ہمارا روحانی رشتہ ہے۔ 19 لاکھ پاکستانی سعودی عرب میں کام کر رہے ہیں۔ 12 لاکھ یو اے ای میں کام کر رہے ہیں 6 لاکھ قطر، عمان، بحرین اور کویت میں۔ یہ 37 لاکھ پاکستانی کم از کم 30 لاکھ گھروں کے کفیل ہیں۔

خدانخواستہ اگر سعودی عرب غیر مستحکم ہوتا ہے تو پاکستان کے ساتھ ساتھ پوری امت مسلمہ میں زلزلہ آئیگا۔

سعودی عرب کو غیر مستحکم کرنے پر کام جاری ہے۔
ایران کے علاوہ یمن، قطر اور لبنان بھی سعودی عرب کے لیے خطرہ بن چکے ہیں۔
سعودی عرب کے شیعہ اکثریتی علاقوں میں بغاوت ہے۔
سعودی عرب میں خفیہ طور پر داعش کی بہت بڑی حمایت موجود ہے۔
جبکہ آل سعود میں آپس کی لڑائی جاری ہے جسکی وجہ سے سعودی فوج کی وفاداریاں کسی بھی تقسیم ہونے کا خطرہ ہے۔

جنرل ضیاء کے دور میں 15 تا 20 ہزار پاکستانی فوج سعودی عرب میں تعئنات رہی۔ میرے خیال میں اس وقت اس سے دگنی تعداد میں پاک فوج کو سعودی عرب میں تعئنات کیا جانا چاہئے۔

سعودی عرب کو اب چین کے علاوہ پاکستانی میزائلز بھی خریدنے چاہئیں۔

کچھ عرصہ پہلے میں نے ایک تجویز پیش کی تھی کہ سعودی آرمی کا بجٹ 80 ارب ڈالر سے زائد ہے جبکہ پاک فوج کا تقریباً 7 ارب ڈالر۔
اگر سعودی عرب پاکستان سے سالانہ 3 یا 4 ارب ڈالر فوجی اخراجات برداشت کرنے کا معاہدہ کر لے تو پاکستان 1 لاکھ مزید فوج بھرتی کر سکتا ہے جس میں سے 50 ہزار مستقل سعودی عرب میں تعئنات رہے گی۔ 50 ہزار پاک فوج کی اہلیت سعودی عرب کی کل فوج سے زیادہ ہے۔

پاکستان کے سپاہ سالار جنرل باجوہ نے اپنے حالیہ دورہ ایران میں ایک بار پھر ایران اور سعودی عرب میں مصالحت کی بات کی ہے۔ میرے خیال میں یہ کوشش جاری رکھنی چاہئے۔

اگر پاکستان ایرانی گیس چین پہنچاتا ہے تو ایران سے بہت کچھ منوایا جا سکتا ہے!

سعودی عرب کو بچانا ہوگا اور یہ کام پاکستان کر سکتا ہے!

تحریر شاہدخان

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here