زر اور صرف زر کے بل پر کسی انتہائی غیرمقبول اور ریاست کے لیے مہلک ترین شخص کو اقتدار دلانے کا واحد راستہ جمہوریت ہے۔

0
387

جمہوری لیڈر ۔۔۔۔۔۔۔۔!

زر اور صرف زر کے بل پر کسی انتہائی غیرمقبول اور ریاست کے لیے مہلک ترین شخص کو اقتدار دلانے کا واحد راستہ جمہوریت ہے۔

جمہوری لیڈر عصبیت کی دعوت دیتے ہیں۔ لسانیت و قومیت کی بنیاد پر عوام کو تقسیم کرتے ہیں۔ لیکن آپس میں جمہوریت کے نام پر ایک دوسرے سے جڑے رہتے ہیں۔

انہیں ریاست سے زیادہ جمہوریت کی فکر رہتی ہے۔ یہ ریاست کے بجائے جمہوریت کو بچانے کی بات کرتے رہتے ہیں۔

یہ محض اپنے ذاتی مفادات کے لیے عوام کو مسلسل حقوق اور ان کے استحصال کا سبق پڑھاتے ہیں۔ ان میں ایک دوسرے کے خلاف نفرت بھر دیتے ہیں، ان میں نہ صرف احساس محرومی پیدا کرتے ہیں بلکہ اس کو مسلسل بڑھاتے بھی رہتے ہیں، انکی تمام ترمحرومیوں کا ذمہ دار ریاست کر ٹہرا کر انکو ریاست کے خلاف بغاوت پر آمادہ کر لیتے ہیں۔

اور خود اپنی اس ساری محنت کا صلہ وہ زر اور اقتدار کی شکل میں ریاست سے ہی وصول کر لیتے ہیں۔ عوام کو کچھ نہیں ملتا۔

حیران کن طور پر حقوق اور استحصال کی پٹیاں پڑھانے والے یہ لیڈران کبھی لوگوں کو فرض اور ذمہ داری کا سبق نہیں پڑھاتے۔

بالآخر ان کے اس طرز عمل کے نتائج کیا نکلتے ہیں ؟؟

شورش، جنگ و جدل، فساد اور بغاؤتیں ۔۔۔۔

ریاست پر یہ برا وقت آنے سے پہلے ہی عوام کے یہ منتخب لیڈران اپنی اولاد اور مال کو محفوظ جگہوں پر منتقل کر دیتے ہیں۔

ان کو جب بھی اقتدار ملتا ہے ہر چیز تباہ و برباد ہو کر رہ جاتی ہے۔ جس کی ذمہ داری یہ ہمیشہ دوسروں پر ڈال کو اپنے ووٹرز کو مطمئن کر لیتے ہیں!

تحریر شاہدخان

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here