جن لوگوں کے اثاثے باہر ہیں، وہ دو فیصد جرمانہ ادا کر کے اپنے اثاثے پاکستان واپس لا سکے ہیں۔

0
378

جن لوگوں کے اثاثے باہر ہیں، وہ دو فیصد جرمانہ ادا کر کے اپنے اثاثے پاکستان واپس لا سکے ہیں۔ وزیراعظم پاکستان کا اعلان۔

اس سے کیا مراد ہے؟

کیا اس کے بعد وہ اثاثے قانونی تصور ہونگے اور ” کہاں سے آئی یہ دولت” والی پوچھ گچھ نہیں ہوگی؟؟؟

مطلب کسی نے 1 کروڑ چوری کیے ہیں۔ تو وہ واپس لاکر 2 لاکھ روپے ادا کرے اور باقی 98 لاکھ کا قانونی مالک بن جائے؟

اس کے بعد وہ قانونی طریقے سے وہ 98 لاکھ دوبارہ پاکستان سے باہر بھیج دے۔ تو پاکستان میں بھی حلال ہوگئے اور باہر بھی؟

یا میں غلط سمجھ رہا ہوں؟

کوئی اس پر روشنی ڈالے گا؟

تحریر شاہدخان

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here