بچوں کو آگہی کے نام پر جنسی تعلیم دینا بدترین غلطی ہوگی۔

0
509

پنجاب میں بچوں کو جنسی تعلیم دینے پر غور ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

بچوں کو آگہی کے نام پر جنسی تعلیم دینا بدترین غلطی ہوگی۔

چھوٹے بچوں میں تجسس پایا جاتا ہے۔ وہ چیزیں سیکھنے کی کوشش کرتے ہیں اور کاپی کرتے ہیں۔

بچوں کی اخلاقیات اور تربیت سے بے پرواہ ٹیچرز ان بچوں کو لگے بندھے انداز میں ان باتوں کی تعلیم دینی شروع کریں گی تو بچوں کو وقت سے پہلے ان خاص معاملات کے بارے میں تجسس ہوگا جو ہرگز ہرگز نہیں ہونا چاہئے۔

ان میں پائی جانی والی قدرتی ہچکچاہٹ دور ہوگی اور وہ آپس میں اس کو ڈسکس بھی کریں گے۔ اس کا نتیجہ “عمل” کی صورت میں برآمد ہوگا۔

اسکا بھی بہت زیادہ امکان ہے کہ اخلاقیات سے محروم ٹیچرز یہ تعلیم دیتے دیتے خود بھی بچوں کی طرف راغب ہونے لگیں۔

اسکا بہترین حل یہ ہے کہ ماؤوں کی تربیت کا اہتمام کیا جائے جو ایک یا دو سیشنز میں سیکھ جائینگی اور اپنے بچے کے مزاج سے واقف، اس کی تربیت اور اخلاق کے لیے فکر مند ماں بہت بہتر انداز میں انکی تربیت کر سکے گی۔

سنا ہے خادم اعلی نے جنسی تشدد کے خلاف بچوں میں آگہی مہم شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور اس سلسلے میں بچوں میں آگہی کے نام پر جنسی تعلیم دینے پر غور کیا جا رہا ہے۔

یہ احمقانہ فیصلہ ان کے سروں پر ٹوٹے گا۔

خادم اعلی صاحب ۔۔۔۔۔۔ !

زینب کو بچانا ہے تو ان اپنے ان ایم پی ایز کو پکڑو جن کے بارے میں پورا علاقہ چیخ رہا ہے کہ وہ 300 بچوں کے ریپ میں ملوث ہیں۔

ان بارہ ایس ایچ اوز اور دو ڈی ایس پیز کو پکڑو جو اس کھیل میں سب کے سب کروڑ پتی ہوگئے ہیں۔

اس مردود کو پکڑو جو ایف آئی آر کاٹنے کے لیے مالٹے طلب کر رہا تھا۔

میڈیا پر روز ایک نئی حد عبور کرنے والی فحاشی کو روکو۔

ورنہ ڈرامے کرنا بند کرو اور اس وقت کا انتظار کرو جب تمھارے خلاف نفرت کا آتش فشاں بالاآخر پھٹ پڑے اور ہر چیز کو خاکستر کر دے۔

تحریر شاہدخان

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here