ایک وقت تھا جب فوج کی ایک ٹیم مختلف علاقوں میں کیمپ لگایا کرتی تھی

0
315

#پاک_فوج_ذندہ_باد
ایک وقت تھا جب فوج کی ایک ٹیم مختلف علاقوں میں کیمپ لگایا کرتی تھی اور لوگوں کو فوج کے متعلق شعور و آگاہی فراہم کرتی تھی۔ لوگوں کو فوج کا حصہ بننے کی دعوت دی جاتی تھی۔ اُس وقت نہ تو تعلیم کو ترجیح دی جاتی تھی نہ ہی میڈیکل کا کوئ تصور تھا بس لوگ اپنے ملک کی خدمت کیلیے فوج کا جوق در جوق حصہ بنتے چلے جاتے اور سالوں فوج کی نوکری شان و شوکت اور خوش اسلوبی سے مکمل کرنے کے بعد ریٹائر ہوتے۔ جنگیں بارڈر پر ہوا کرتی تھیں اور اسلحے کا بھی فُقدان تھا مگر جیت اور ملک کی سلامتی کیلیے جذبہِ ایمانی سے ہر ممکن کاوش کو بروۓ کار لایا جاتا۔

اکثر فوجی اپنی ذندگی کے اہم اور قیمتی سال بارڈر اور برفانی پہاڑوں کی نظر چڑھا دیتے اور اپنے خون کے آخری قطرے تک ملک کا دِفا کرتے رہے۔ یہ وہی جذبہ تھا جس کے تحت بارود سے لیس شدہ جسم ٹینکوں کے نیچے تباہ کر دیے مگر ملک کی شان میں گُستاخی نہ ہونے دی۔ ایسی بے شمار قربانیوں سے بھری پڑی ہے پاک فوج جنہوں نے پاکستان کیلیے شہادتیں دیں اور کوئ غازی بن کر آج بھی اُن قربانیوں کے گواہ کے طور پر موجود ہیں۔

موجودہ پاک فوج نہ صرف ذہنی و جسمانی طور پر مظبوط ہے بلکہ تعلیم یافتہ ہونے کیساتھ ساتھ جدید اسلحہ سے بھی لیس ہے۔ فوج اپنے ہر دور میں مُلک کی وفادار رہی ہے اور ہمیشہ رہے گی۔ وقت کے ساتھ دشمن بھی اتنا قریب آ چکا ہے کہ ہماری چار دیواری ہی ہمارا بارڈر بن چُکی ہے۔ مگر یہ فوج نہ تو پہلے گھبراہی ہے نہ ہی اب اور نہ ہی آئندہ گھبرانے اور پیچھے ہٹنے والی ہے بلکہ ہر موڑ پر ہر مشکل میں سب سے آگے ہے اور ہمیشہ رہے گی۔

اگر ہم آج آزادی سے اپنی عبادات اور روز مرہ کے کام بغیر کسی ڈر اور خوف کے سر انجام دیتے ہیں تو یہ بھی فوج کی قربانیوں کی بدولت ہے۔ فوج اس ملک کے باسیوں سے اس سے زیادہ کچھ نہیں مانگتی کہ ان کیلیے اور ان کے اہل و عیال کے لیے خلوصِ دل سے دعائیں کی جائیں کیونکہ پاکستان کے دشمنوں کو اپنے ناپاک ارادوں کی تکمیل میں حائل اگر کوئی سب سے بڑی رکاوٹ نظر آتی ہے تو وہ یہ پاک فوج ہی ہے جس میں ایسے ایسے ﷲ کے شیر ہیں جو بادشاہوں کو تخت اُلٹ دیں، جن کی دعائیں رد نہیں جاتیں اور نشانے خطا نہیں ہوتے ان مجاہدوں کا ہم جتنا شکریہ ادا کریں وہ کم ہے۔۔۔۔
للہ ہم سب کا حامی و ناصر ہو۔۔۔ آمین

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here