ایک سادہ سا حساب کتاب ہے۔ میں نے ہر صوبے کی آبادی پر اس کے بجٹ کو تقسیم کیا ہے۔ نتائج آپ خود ملاحظہ کیجیے!

0
1044
” حقوق ” کے نام پر سیاستدان عوام کو کیسے گمراہ کرتے ہیں اسکی ایک چھوٹی سی مثال دینا چاہتا ہوں۔ 

ایک سادہ سا حساب کتاب ہے۔ میں نے ہر صوبے کی آبادی پر اس کے بجٹ کو تقسیم کیا ہے۔ نتائج آپ خود ملاحظہ کیجیے!

پنجاب ۔۔۔۔ آبادی 11 کروڑ ۔۔ بجٹ 1917 ارب 
فی کس 17918 روپے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

سندھ ۔۔۔۔ آبادی 4 کروڑ 70 لاکھ ۔۔ بجٹ 1004 ارب
فی کس 21361 روپے

پختونخواہ ۔۔۔۔ آبادی 3 کروڑ ۔۔۔۔ بجٹ 603 ارب
فی کس 20100 روپے

بلوچستان ۔۔۔۔۔۔ آبادی 1 کروڑ 20 لاکھ ۔۔۔۔ بجٹ 329 ارب
فی کس 27416 روپے

آپ نوٹ کیجیے ۔۔ سب سے زیادہ فی کس بجٹ بلوچستان کا اور سب سے کم پنجاب کا ہے۔

اس بجٹ کا اعلان آپ کے صوبائی راہنما خود کرتے ہیں۔ تو پھر آخر یہ چلے کہاں جاتے ہیں؟؟؟؟ کیا پنجابی آکر لے جاتے ہیں؟؟

خدارا جاگئے۔ عصبیت کی طرف بلانے والوں کو پہچانیے۔ یہی آپ کو لوٹتے ہیں اور پھر یہی شور بھی مچاتے ہیں۔

اس کی بدترین مثال اس وقت صوبہ سندھ ہے جس کو پیپلز پارٹی نے پچھلے چند عشروں میں بھنبوڑ کر رکھ دیا ہے۔ اندروں سندھ حالات اتنے برے ہیں کہ قحط کی سی کیفیت ہے۔ کراچی جیسے شہر میں پانی اور بجلی تک ناپید ہے۔

کھروبوں روپے ڈکار جانے والی پیپلزپارٹی کے وزیر اعلی بڑی ڈھٹائی سے فرما دیتے ہیں کہ ” وفاق سندھ کے ساتھ ظلم کر رہا ہے” ۔۔۔۔۔

تحریر شاہدخان

نوٹ ۔۔۔۔۔۔۔ بلوچستان کے بعد ہمیشہ زیادہ بجٹ کے پی کے کا رہا ہے۔ لیکن اس بار دہشت گردی سے متاثرہ لاکھوں قبائیلوں کی کے پی کے اچانک نقل مکانی نے انکی آبادی کا تناسب بڑھا دیا ہے جسکی وجہ سے فی کس بجٹ تھوڑا کم ہوا ہے لیکن پنجاب سے بہرحال زیادہ ہے۔

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here