اگر منظور پسکین سچ میں پشتونوں کا ہمدرد ہے اور اسکی تحریک دہشت گردی کے خلاف ہے تو

0
683

اگر منظور پسکین سچ میں پشتونوں کا ہمدرد ہے اور اسکی تحریک دہشت گردی کے خلاف ہے تو ۔۔۔۔۔۔۔۔

۔ 1۔ افغانیوں کی واپسی کا مطالبہ کرے کیونکہ دہشت گردی کی زیادہ تر وارداتوں کے پیچھے افغانی ہیں۔

۔ 2۔ پاک افغان سرحد پر باڑ لگانے کا مطالبہ کرے تاکہ افغانستان سے پشتون علاقوں میں دہشت گردوں کا داخلہ بند ہوسکے۔

۔ 3۔ جن دہشت گردوں کو عدالتوں سے سزائیں ہو چکی ہیں وہ پشتونوں کے ثابت شدہ قاتل ہیں۔ انکی پھانسیوں کا مطالبہ کرے۔

۔ 4۔ دہشت گردی کے سب سے بڑے ماسٹر مائنڈ کل بھوشن کی پھانسی کا مطالبہ کر کے دکھا دے۔

۔ 5۔ کل بھوشن کے اعترافات کو مد نظر رکھتے ہوئے انڈیا سے پاکستان میں دہشت گردی بند کرنے اور پشتونوں اور بلوچوں کا خون نہ بہانے کا مطالبہ کرے۔

۔ 6۔ انڈیا سے سوال کرے کہ اتنے سال تک اس کے درجن بھر کونسل خانے وزیرستان کی سرحد پر کیا کھیل کھیلتے رہے؟ انڈیا سے پشتونوں کے خون کا حساب مانگے۔

۔ 7۔ اس بار بی بی سی (برطانیہ ) کو انٹرویو دیتے ہوئے ان سے کراچی میں پشتونوں کے سب سے بڑے قاتل الطاف حسین کی پاکستان حوالگی کا مطالبہ ضرور کرے اور یہ سوال بھی کہ اس کو برطانیہ نے پناہ کیوں دے رکھی ہے؟

۔ 8۔ وائس آف امریکہ پر اگلا انٹرویو دیتے ہوئے امریکہ سے یہ سوال ضرور کرے کہ اس کے ہیلی کاپٹرز میں داعش کیسے نقل و حرکت کرتی ہے بقول افغان صدر حامد کرزئی کے۔ اور امریکہ پشتونوں پر ڈرون حملے کیوں کر رہا ہے؟

۔ 9۔ احسان اللہ احسان اور لطف اللہ محسود نامی گرفتار طالبان کمانڈرز کے انکشافات کے پیش نظر افغانستان سے سوال کرے کہ افغانستان کی ایجنسی این ڈی ایس کیوں پشتونوں کے قاتلوں کو سپورٹ کررہی ہے اور افغانستان سے پشتونوں کے خون کا حساب مانگے۔

۔ 10۔ پاکستان افغانستان کو کنڑ سمیت افغانستان کے کئی علاقوں میں موجود دہشت گردوں کے محفوظ ٹھکانوں کے بارے میں خبردار کر چکا ہے اور دہشت گردوں کی پاکستان حوالگی کا مطالبہ کر چکا ہے۔ منظور بھی افغانستان سے فضل اللہ اور منگل باغ سمیت افغانستان میں موجود پشتونوں کے قاتلوں کی پاکستان حوالگی کا مطالبہ کرے۔

۔ 11۔ فضل اللہ، منگل باغ یا ٹی ٹی پی کے خلاف ہی کوئی جلسہ کر کے دکھا دے؟

منظور پسکین نے تو اب تک اس بات کا بھی جواب نہیں دیا کہ اگر اس کی تحریک پشتونوں کا خون بہانے والوں (دہشت گردوں) کے خلاف ہے تو ٹی ٹی پی نے کیوں اس کو سپورٹ کرنے کا اعلان کیا ہے؟؟

اگر وہ یہ مطالبے نہیں کر سکتا تو مان لے کہ اس کی جنگ پشتونوں نہیں بلکہ افغانیوں اور ہندوؤں کے لیے ہے اور انکی دم توڑی ہوئی پراکسی جنگ کو ایک نئے نعرے کے ذریعے دوبارہ زندگی دینے کی کوشش کر رہا ہے تاکہ پشتون سکون کا سانس نہ لے سکیں۔

” پشتانہ ڑاندہ نہ دی منظورہ ” ۔۔۔۔۔۔۔ !

میرے ایک اورگزئی ساتھی کے بقول ۔۔۔ ” منظور پسکین ی چی سل کالہ بے مالگے اوخری ھم نو دا مطالبے نہ شی کولے ولی امریکہ، انڈیا اور افغانستان بہ سوک خفہ کوی” ۔۔۔ 🙂

تحریر شاہدخان

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here