امریکہ براہ راست پاکستان میں انتخابات اور انتخابات کے بعد پیدا ہونی والی صورت حال کو اپنی مرضی کا رخ دینے کی کوشش کر رہا ہے۔

0
989

امریکہ براہ راست پاکستان میں انتخابات اور انتخابات کے بعد پیدا ہونی والی صورت حال کو اپنی مرضی کا رخ دینے کی کوشش کر رہا ہے۔

یہ کارٹون نیویارک ٹائمز کا ہے۔

آپ دیکھ سکتے ہیں کہ ایک ہاتھ جس نے فوجی بوٹ پہن رکھا ہے ایک شخص کو پی ایم ایل ن کو ووٹ ڈالنے سے روک رہا ہے اور اس کو پی ٹی آئی کو ووٹ ڈالنے کا اشارہ کر رہا ہے۔

اس کارٹون سے دو باتیں واضح ہیں۔

پہلی یہ کہ امریکہ نواز شریف کو اقتدار میں دیکھنا چاہتا ہے۔

اور دوسری اگر تمام تر دھاندلی اور پراپیگینڈا ہتھکنڈوں کے بعد بھی پی ٹی آئی اکثریت حاصل کرتی ہے تو اس کی جیت کا ذمہ دار پاک فوج کو قرار دے کر ملک بھر میں پی ٹی آئی اور پاک فوج کے خلاف ہنگامے کرائے جائنگے۔

آپ یہ بھی نوٹ کیجیے کہ ن لیگ ابھی سے انتخابات میں دھاندلی اور “خلائی مخلوق” کے ساتھ مقابلہ کرنے کے شوشے چھوڑ رہی ہے۔

میری ذاتی رائے میں ” بروقت انتخابات ” پاکستان کو مزید بربادی کی طرف لے جائنگے چاہے جو مرضی جیتے۔

عدلیہ نواز شریف کے معاملے پر جو ڈرامے بازیاں کر رہی ہے اس کے بعد بظاہر دونوں ایک ہی پیج پر نظر آتے ہیں اور دونوں ہی “بروقت انتخابات” چاہتے ہیں۔
پاک فوج محض روبوٹک انداز میں ان کی تائید کر رہی ہے۔

مجھے یہ بھی شک ہے کہ پرویز مشرف کو بلانا بھی ان دونوں کا مشترکہ ٹریپ ہی ہے۔

میری پاک فوج کو تجویز ہے کہ الیکشن کمیشن پر دباؤ ڈالے کہ وہ اس امریکی اخبار نیویارک ٹائمز کے خلاف کیس کرے۔

اور حکومت سے معذرت کر لے کہ وہ سرحدوں پر موجود خطرات کے پیش نظر پولنگ سٹیشنز کی حفاظت کا ذمہ نہیں لے سکتی اس کام کے لیے ملک بھر میں موجود 4 لاکھ پولیس بہت ہے ان ہی سے یہ کام لیا جائے۔

اگر پاک فوج کے زیر نگرانی انتخابات کروانے بھی ہیں تو فوج کو یہ ٹاسک نہ دیا جائے کہ ” پولنگ سٹیشن پر کوئی حملہ نہ ہو” بلکہ یہ ٹاسک دیا جائے کہ ” انتخابات کے دوران دھاندلی نہ ہو ” ۔۔۔ پھر بے شک فوج سے کرالیں نگرانی۔

اور آخری بات ۔۔۔

اگر عدلیہ بیانات جاری کرنے کے بجائے فیصلوں پر دھیان دے اور تب تک انتخابات نہ کرائے جب تک ” منتخب ہونے والوں ” سے متعلق تمام اہم کیسز کے فیصلے نہ ہوجائیں تو قوم پر احسان ہوگا۔

قوم کو بھی واضح طور پر معلوم ہو کہ وہ خائن کو ووٹ دے رہے ہیں یا امانت دار کو۔

تحریر شاہدخان

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here