نااہل یا سادہ الفاظ میں چور، زانی، ڈاکو، غدار، دہشت گرد، قاتل، شرابی اور پاگل شخص کو سیاسی جماعت کی سربراہی یا پارٹی آفس سنبھالنے کا اہل قرار دینے والی شرمناک آئینی ترمیم سپریم کورٹ میں دھبڑ دھوس ہونے والی ہے ان شاءاللہ۔

جس دن ن لیگ نے نااہل شخص کے حوالے سے مذکورہ ترمیم سینیٹ میں پیش کی تھی، اس دن جمعہ کی شام تھی ۔ اپوزیشن کو بالکل نہیں بتایا گیا تھا کہ کس معاملے پر بحث ہوگی، جس کی وجہ سے اپوزیشن کے بہت کم لوگ موجود تھے۔

0
676

نااہل کی “اہلیت” خطرے میں ۔۔۔۔۔۔ !

نااہل یا سادہ الفاظ میں چور، زانی، ڈاکو، غدار، دہشت گرد، قاتل، شرابی اور پاگل شخص کو سیاسی جماعت کی سربراہی یا پارٹی آفس سنبھالنے کا اہل قرار دینے والی شرمناک آئینی ترمیم سپریم کورٹ میں دھبڑ دھوس ہونے والی ہے ان شاءاللہ۔ 

شائد کسی کو یاد ہو ۔۔۔ 

جس دن ن لیگ نے نااہل شخص کے حوالے سے مذکورہ ترمیم سینیٹ میں پیش کی تھی، اس دن جمعہ کی شام تھی ۔ اپوزیشن کو بالکل نہیں بتایا گیا تھا کہ کس معاملے پر بحث ہوگی، جس کی وجہ سے اپوزیشن کے بہت کم لوگ موجود تھے۔

لیکن لیگی اراکین سمیت ان کے اتحادی جے یو آئی ( جس نے اجلاس کی صدارت کی) اور اے این پی کے علاوہ ایم کیو ایم کے وہ اراکین بھی رکے ہوئے تھے جن کو صرف چند ہفتے پہلے شاہد خاقان عباسی نے 25 ارب روپے ” پیکج ” دیا تھا۔

آپ نوٹ کیجیے نواز شریف کراچی کو ایم کیو ایم سے صاف کرنے کا کریڈٹ لیتا ہے لیکن ایم کیو ایم نے نہ صرف سینیٹ میں اس کو ووٹ دیا بلکہ ایم کیو ایم کے سینیٹر میاں عتیق نے دھڑلے سے میڈیا پر آکر بیان دیا کہ ” اگر سو بار بھی ووٹ دینا پڑا تو میں نواز شریف کو ووٹ دونگا ” ۔۔۔۔۔۔۔

ویسے بھی آجکل نواز شریف کے حق میں فضل الرحمن کے بعد سب سے زیادہ بیانات الطاف حسین کے ہی آرہے ہیں ۔۔۔۔۔ 

ترمیم منظور ہونے کے بعد ہوا ایسا کہ سینیٹ نے دھوکے کے ذریعے پاس ہونے والی اس ترمیم (الیکشن ایکٹ 2017 کی شق نمبر 203 ) کے خلاف گزشتہ دنوں قرارداد پاس کر لی۔

اس قرار داد کے بعد سپریم کورٹ کو ایک اور مضبوط جواز مل گیا ہے اس شرمناک آئینی ترمیم کو کلعدم قرار دینے کا۔

ن لیگ کی یہ ترمیم اس وقت سپریم کورٹ میں چیلنج ہو چکی ہے۔

ن لیگ نے یہ قرارد پاس کرنے کے لیے قوم کے علاوہ ایوان کو بھی دھوکہ دیا۔ اور یہ دھوکہ ان کو مہنگا پڑ رہا ہے۔

تحریر شاہدخان

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here