آئی ایس آئی کا سب سے پہلا ہدف پاکستان دشمن قوتیں ہیں

0
1057

آئی ایس آئی کا سب سے پہلا ہدف پاکستان دشمن قوتیں ہیں اور پاکستان دشمن عناصر ادارے اور ممالک اور شخصیات ہیں یہ ہدف قیام کے بعد سے آج تک بدستو ر قائم ہے اس میں کسی بھی طرح کی کوئی تبدیل واقع نہیں ہوئی ہے اسی لئے اس ہدف کے باعث بعض اوقات پاکستان دشمن قوتیں اور عناصر آئی ایس آئی کو اپنا ہدف بنا کر اس کے خلاف کاروائی اور پروپیگنڈہ کرتے رہتے ہیں کیونکہ وہ جانتے ہیں کہ جب تک یہ ادارہ قائم ہے اس وقت تک وہ پاکستان کے خلاف کوئی کاروائی نہیں کرسکتے ہیں اور ان کی تمام سازشیں یہ ادارہ ناکام بنا دے گا

یہ بات ان کے لئے حیرت انگیز ہے کہ تیسری دنیا سے تعلق رکھنے والے ملک کا دفاعی ادارہ اس قدر ترقی کر چکا ہے کہ اس نے دنیا کی دوسری بڑی طاقت کے دفاعی ادار ے کے جی بی KGB کو شکست دیدی یہ ہی نہیں بلکے بھارتی ایجنسی را RAW کو بہت سے میدانوں میں شکست دی یہ ہی نہیں CIA بھی شکست کہا گئی یہ ہی وجہ ہے کہ اکثر آئی ایس آئی کے خلاف پروپیگنڈہ ان اداروں کی جانب سے کیا جاتا ہے جو کہ آئی ایس آئی کے زخم خوردہ ہوتے ہیں ان کے اس پروپیگنڈے میں بعض پاکستانی بھی نادانستگی میں ان کا ساتھ دیتے ہیں یہ بات دلچسپ بھی ہے

اور حیرت انگیز بھی کہ دیگر ممالک مثلاً روس، بھارت، اسرائیل، برطانیہ ،جرمنی اور امریکہ میں ان کے ان دفاعی اداروں کے خلاف نہ تو اپوزیشن کی جانب سے کوئی پروپیگنڈہ کیا جاتا ہے اور نہ ہی ان کو پریس میں لایا جاتا ہے بلکہ ان کا امیج بہتر سے بہتر بنانے کی کوشش کی جاتی ہے جس کی واضح مثال جیمز بانڈ کی فلمیں ہیں جن کا مرکزی کردار جیمز بانڈ جو کے ایجنٹ نمبر زیرو زیرو سیون ہے ان فلموں کا مرکزی خیال ہمیشہ ایک ہی ہوتا ہے کہ ہیرو جیمز بانڈ یا ایجنٹ زیرو زیرو سیون ملٹری انٹیلی جنٹس کا رکن ہے اور ملکہ بر طانیہ اور برطانیہ کے دفاع کے لئے دشمنوں کی سرکوبی کرتا ہے اس مقصد کے لئے اس نے بہت سے کارنامے انجام دئے ہیں اگرچے کہ بظاہر یہ تفریح کا زریعہ ہے مگر برطانیہ جیسے ملک میں فلم کے اس زریعے کو اپنے ملک کے بہتر امیج کے لئے جس طرح استعمال کیا جارہا ہے اس کی یہ ایک معمولی مثال ہے دلچسپ ترین پہلوہے کہ ملکہ برطانیہ اور شاہی خاندان بڑی دلچسپی کے ساتھ ان فلموں کو دیکھتے ہیں

اسی طرح دوسری جنگِ عظیم کے دوران اور اس کے بعد بنائی جانے والی فلموں گنز آف نیوران، عقابوں کا نشیمن یا وئیر ایگل ڈئیر کا موضوع اتحادی افواج کے جاسوسوں کی وہ کاروا ئیاں تھیں جو کہ انہوں نے جرمنوں کے خلاف انجام دیں تھیں اُسی طرح ہالی ووڈ میں بہت سی بنائی جانے والی فلموں میں امریکی ایجنٹوں کو امریکہ کے دشمنوں کا خاتمہ کرتے ہوئے بتایا گیا ہے جن میں مشہور امریکی اداکار آرنلڈ شوآرانگیز کی متنازعہ فلم ٹرو لائیزبھی شامل ہے جس پر عرب ممالک میں پابندی عائد کردی گئی تھی معا ضی میں بننے و الی ریمبو کی فلمو ں کا مرکزی آئیڈیا بھی امریکی دشمنوں کا خاتمہ تھا ریمبو کی ایک فلم افغانستان پر بنائی گئی تھی جس میں ریمبو کو افغانستان میں روسیوں کے خلاف جدوجہد کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے

اسی طرح بھارتی فلمی شہر ممبئی میں بنائی گئی بہت سی ایکشن فلموں میں بھارت کے خفیہ ایجنسیوں کے ایجنٹوں کی ان کاروائی کو دکھایا جاتاہے جو کہ پاکستان سمیت بھارت کے دشمن ممالک کے خلاف کیں گئیں ہیں ان فلموں کا بنیادی مقصدان ایجنسیوں کا امیج بھارتی عوام میں بہتر بنانا ہے

یہ ہی صورتحال اسرائیل کے ادارے موساد کی ہے جو کہ اسرائیل ادارہ ہے بلکہ موساد کے لئے تو یہ بات کہی جاتی ہے کہ دنیا کے کسی بھی گوشے میں بسنے والے یہو دی موساد اور دیگر اسرائیل اداروں کی مدد کرنا اپنا مذہبی فریضہ تصور کرتے ہیں یہ ہی وجہ ہے کہ مو ساد کسی بھی طرح کا آپریشن باآسانی انجام دے دیتی ہے

مگر افسو س کے ساتھ یہ بات کہنا پڑتی ہے کہ پاکستان کے اس اہم ترین ادارے کو جس کے قیام کا بنیادی مقصد پاکستان کا دفاع ہے جس کی بنیاد قائد اعظم نے رکھی تھی اس کو ہمیشہ ہی متنازعہ بنانے کی کوشش کی جاتی رہی ہے بلکہ بعض حلقوں کی جانب سے تو اس طرح کی کوشش کی جاتی رہی ہے کہ کسی طرح سے آئی ایس آئی کے خلاف کوئی مہم چلائی جائے حالانکہ اس طرح وہ ملک دشمن عناصر کی امداد کررہے ہوتے ہیں جب کہ پاکستان کے علاوہ کسی بھی دوسرے ملک میں اپنے دفاعی اداروں کے خلاف کوئی کاروائی یا مہم نہیں چلائی گئی ہے۔

Credit #PAKSOLDIER_HAFEEZ

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here